‫ہللا ‪ :‬عوال‬

‫ا ذخبى( ‘‘ہ ے۔ ک یب ً بصل ه یں سات ث بث شک ت ک و ق شآى ً ے ہ ن شک ث ے’’‪:‬ف شهبی ب ً ے ب‬
‫)‪3:44‬‬
‫ک یب‬
‫ث بث شک ت‬
‫سات‬
‫عے‬
‫هشاد‬
‫ش جبى‬
‫ک‬
‫پ ٌذسھوی ں‬
‫سات‬
‫ہ ے؟‬
‫ش جبى سادم عے سات اط ‪:‬جواة‬
‫ہ ے ‘‘ا قذس ی لۃ’’ هشاد عے اط ث ل کہ ً ہ یں سات پ ٌذسھوی ں ک‬
‫ہللا ہ وا۔ ً بصل ه یں ا و جبسک سه ضبى هج یذ قشآى ک یوً کہ‬
‫ب‬
‫‪:‬ف شهبی ب ً ے‬
‫ق شآى’’‬
‫سه ضبى‬
‫ک ے‬
‫هہ ی ٌے‬
‫ه یں‬
‫ً بصل‬
‫ک یب‬
‫‘‘گ یب۔‬
‫ا ج قشٍ(‬
‫)‪185:2‬‬
‫اوس‬
‫اط‬
‫سات‬
‫کب‬
‫ً بم‬
‫ثھ‬
‫ث تب‬
‫‪:‬دی ب‬
‫ی لۃ ک و )ق شآى( اط ً ے ہ ن شک ث ے’’‬
‫)‪ 1:97‬ا قذس( ‘‘ک یب۔ ً بصل ه یں ا قذس‬
‫ہللا س عول ک شً ب ع جبدت خ ظو ط ه یں سات اط ک یب ‪ :‬عوال‬
‫ہ ے؟ ث بث ت و ع لو غے ع ل یہ ہللا ط ل‬
‫ہ یں۔ ً ہ یں ث بث ت ه شبغل دی گش اوس ع جبدت خ ظو ط ک سات اط عے دذی ث طذ یخ ث ھ ک غ ‪:‬جواة‬
‫‪ :‬عوال‬
‫ک یب‬
‫اط‬
‫سات‬
‫خ ظو ط‬
‫ع جبدت‬
‫ک شً ے‬
‫ه یں‬
‫ک وئ‬
‫دشج‬
‫ہ ے؟‬
‫س عول ک شً ب خبص یے ک ے سوصے ک و دى اوس ع جبدت ک و سات ک غ ک ے د یل ث غ یش ‪! 1‬ہبں ج ‪:‬جواة‬
‫ہللا س عول ک جو شات اوس عوهواس ک یوً کہ ہ ے‪ ً ،‬بف شهبً ک و ع لن ع ل یہ ہللا ا لہ ظ ل‬
‫ہللا ط ل‬
‫ہ ے۔ دی ب ق شاس دى اف ضل عے دً وں وبم ک و جو ے اوس ہ ے ف شهبئ ث یبى ف ض ی لت و ع لو ٌے ع ل یہ‬
‫ی کي‬
‫‪:‬ف شهبی ب‬
‫ک ے سوصے ک و جو ے طشف عے ه یں دً وں اوس یے ک ے ع جبدت ک و جو شات طشف عے ه یں سا وں’’‬
‫یے‬
‫خبص‬
‫ًہ‬
‫‘‘…ک شو‬
‫طذ یخ(‬
‫ه غ لن‪،‬‬
‫‪:‬دذی ث‬
‫)‪1144‬‬
‫ه یں ا ع الم دی ي ی ہ ‪2‬‬
‫ہللا ہ ے۔ ا ضبف ہ عے طشف اپ ٌ‬
‫ب‬
‫‪:‬ف شهبی ب ً ے‬
‫)‪ 1:49‬ا ذجشات( ‘‘ڈسو۔ عے ہللا اوس ث ڑھو ً ہ آگ ے عے س عول ک ے اط اوس ہللا !وا و ای وبى اے’’‬
‫س عول‬
‫ا لہ ظ ل‬
‫ہللا‬
‫ع ل یہ‬
‫و ع لو ٌے‬
‫‪:‬ف شهبی ب‬
‫چ یض وٍ و ہ و ً ہ هوجود عے پ ہ لے ه یں اط جو ً کب چ یض ً ئ ک وئ ه یں دی ي اط ہوبسے ً ے جظ’’‬
‫هشدود‬
‫‘‘ہ ے۔‬
‫طذ یخ(‬
‫ا جخبسی‪،‬‬
‫‪:‬دذی ث‬
‫)‪2697‬‬
‫آپ‬
‫طل‬
‫ہللا‬
‫ع ل یہ‬
‫و ع لن‬
‫ہش‬
‫خط جے‬
‫ه یں‬
‫اس شبد‬
‫‪:‬ف شهب ے‬
‫ہللا ث بت ث ہ تشی ي شک ث ے’’‬
‫ک ب )و ع لن ع ل یہ ہللا ط ل ( هذوذ سا ع تہ ث ہ تشی ي اوس ہ ے ک تبة ک‬
‫دی ي( اوس ہ یں ک بم ہ وئ ے ک یے جبدای ً ئے عے طشف اپ ٌ )ه یں دی ي( ک بم ث ذ شی ي اوس ہ ے۔ سا ع تہ‬
‫ے ه یں ج ہ ٌن گ وشاہ ہ ش اوس ہ ے گ وشاہ ث ذعت ہ ش اوس ہ ے ث ذعت ک بم ہ ش وا ال جبً ے ک یب ای جبد ً یب )ه یں‬
‫جبً ے‬
‫)‪: 1579‬دذی ث ا ٌ غبئ ‪ ،‬و ع ٌي ‪: 867،‬دذی ث ه غ لن‪ ،‬طذ یخ( ‘‘ہ ے۔ وا‬
‫ہللا س عول ث ب ہلل ً ور ک ہ ہ ے ک ش ب ظبہ ش ی ہ عے عول اپ ٌے شخض ای غب ‪3‬‬
‫و ع لن ع ل یہ ہال ط ل‬
‫ش جبى پ ٌذسھوی ں ی ٌ ہ ے۔ یب چھ پب د ظہ ک چھ ک ب دی ي ک ے ک ش خ یبً ت ً ے‬
‫دى اوس ع جبدت سات ک‬
‫ه گش ھے د ظہ ک ب دی ي اوس ک بم ک ے ث واة اوس ع جبدت ث ھ وغ یشٍ ه ی الد خ تن‪ ،‬جو شا یں‪ ،‬ق ل‪ ،‬سوصٍ‪ ،‬ک ب‬
‫ً ج‬
‫ک شی ن‬
‫طل‬
‫ہللا‬
‫ع ل یہ‬
‫و ع لن‬
‫ًے‬
‫چھ پب‬
‫یے۔‬
‫اهبم‬
‫هب ک‬
‫سدوہ‬
‫ہللا‬
‫ف شهب ے‬
‫‪:‬ہ یں‬
‫د غ ٌہ ث ذعت( اچھب ک و اط اوس ک یب ای جبد )سواج و س عن اوس ث ذعت( عول ً یب ک وئ ه یں ا ع الم ً ے جظ’’‬
‫ً ے و ع لن ع ل یہ ہللا ط ل هذوذ ک ہ ک یب خ یبل ی ہ ی ق ی ٌب ً ے اط و عوجھب ک بم )وا ال ث واة و اجش اوس‬
‫ن ً ے ه یں جآ’’ ‪:‬ہ ے ف شهب ب و ہللا ک ہ یے اط ک ‪ ،‬خ یبً ت ه یں ادائ ی گ ک س عب ت )ث ب ہلل ً ور(‬
‫ث ھ آج وٍ ھب‪ ً ،‬ہ یں دی ي وق ت )ک ے دی ي کو یل( اط ک بم جو چ ٌبً چہ ‘‘دی ب۔ ک ش ه کول دی ي وھبسا پ ش‬
‫االع ت ظبم( ‘‘ ع ک تب۔ ہ و ً ہ یں )ک بم وا ال ث واة و اجش( دی ي‬
‫)‪ : 64/1‬ل شبط ج‬
‫اوس گ یبسہ وی ں چب ی غواں‪ ،‬ق ل‪ ،‬د واً ب‪ ،‬خ تن ‪:‬ه ال جبئ ے‪ ،‬ک یب ک ش عوجھ ع جبدت ک بم ک وئ اگ ش ‪ :‬عوال‬
‫ہ یں؟ ً بجبئ ض ث ھ ی ہ ک یب و وغ یشٍ‪ ،‬پ ڑھ ٌب ع الم و ط الح پ ہ لے عے اراى اوس ک شً ب وغ یشٍ جو شا یں‬

‫ہللا س عول ی ہ ہ ے‪ ً ،‬ہ یں ع جبدت ک بم ک وً غب اوس ہ ے ع جبدت ک بم ک وً غب ‪:‬جواة‬ ‫و ع لن ع ل یہ ہللا ط ل‬ ‫ی ہ اگ ش ہ ے‪ ،‬جب ب ک یب ک ش عوجھ ث واة اوس ع جبدت اة ک و ک بهوں جبً تب۔جي ً ہ یں ک وئ ک ش ث ڑھ عے‬ ‫ہللا س عول ج ٌبة خود ک بم ی ہ پ ہ لے عے عت و ہ و ے ک بم ک ے ث واة‬ ‫ک ش ے۔ و ع لن ع ل یہ ہللا ط ل‬ ‫ہ و ً ہ یں ک بم ک ے ث واة اوس ع جبدت ث ھ ک جھ ی ہ و ک یے ً ہ یں ً ے و ع لن ع ل یہ ہللا ط ل آپ اگ ش‬ ‫ع ک تے۔‬ ‫ع ل یہ ہللا ط ل آپ عے ع ٌہب ہللا س ض عبئ شہ اهبں جو ہ ے واق ہ ک ب اف شاد یي ه یں دذی ث ج ی غے‬ ‫عبسی ه یں ‪ :‬ھب ک ہب ً ے ای ک عے ه یں اى ھے۔ سہ ے ک ش عوال ه ت لق ک ے ع جبدت ک و ع لن‬ ‫صً ذگ‬ ‫اوس گ ب سک ھوں سوصٍ ک و دى ہو ی شہ ه یں‪:‬ک ہب ً ے دو عشے گ ب۔ گ ضاسوں ہ وئ ے پ ڑھ تے ً وبص سات عبسی‬ ‫عوش عبسی ث ل کہ ک شوً گب ً ہ یں شبدی ک جھ ه یں ‪:‬ک ہب ً ے ی غشے گ ب۔ ک شوں ً ہ یں ً بغہ ک جھ‬ ‫ع جبدت‬ ‫ه یں‬ ‫گ ضاسوں‬ ‫گ ب۔‬ ‫ہللا س عول‬ ‫طل‬ ‫ہللا‬ ‫ً ے و ع لن ع ل یہ‬ ‫ی ٌوں‬ ‫ک و‬ ‫ث ال‬ ‫کش‬ ‫‪:‬ف شهبی ب‬ ‫ہللا !خ جشداس’’‬ ‫ہ وں‪ ،‬ه ت ق صی بدٍ عے عت اوس وا ال ڈسً ے عے ہللا صی بدٍ عے عت ن ه یں !ق غن ک‬ ‫ہ وں پ ڑھ تب ث ھ ً وبص ک و سات ه یں ہ وں۔ دی تب ث ھ چھوڑ اوس ہ وں سک ھ تبث ھ سوصٍ ه یں ث بوجود ک ے اط‬ ‫ع ٌت ه یشی ک بم عبسے ی ہ پ ظ( ہ یں۔ ک ث ھ شبدی بں عے عوس وں ً ے ه یں اوس ہ وں ث ھ عو ب اوس‬ ‫عے هجھ ک ب اط پ ھ یشا‪ ،‬ه ٌہ عے ع ٌت ه یشی ً ے جظ )ہ یں‬ ‫لق ک وئ‬ ‫ث خبسی‪ ،‬طذ یخ( ‘‘ً ہ یں۔‬ ‫‪:‬دذی ث‬ ‫)‪5063‬‬ ‫پ ش طوس ظبہ شی ث ھ عول ک ب اى اوس ھب ً یک ث ھ اسادٍ ک ب ع ٌہن ہللا س ض طذبة ی ٌوً ب اى دبالً کہ‬ ‫دی ب۔ ق شاس خ الف ک ے ع ٌت اپ ٌ ا عے ً ے و ع لن ع ل یہ ہللا ط ل ک شی ن ً ج ه گش ھب۔ ً یک‬ ‫ً جوی طشیقہ ک یب چ الً ب‪ ،‬وغ یشٍ پ ٹبخے اوس ک شً ب چشاغبں ک شً ب‪ ،‬سو شي آگ ک و ش جبى پ ٌذسھوی ں ‪ :‬عوال‬ ‫ہ ے؟‬ ‫دوس ک ے س ش یذ ہ بسوى خ ل ی فہ ع جب ع ه یں ا طل ہ ے۔ ً ہ یں وجود ک وئ ک ب چ یضوں اى ه یں ا ع الم ‪:‬جواة‬ ‫ھے۔ ک یے ششوع ک بم ی ہ ً ے ث شه ک یوں ه یں‬ ‫ظبہ شی ھے۔ )پ جبسی ک ے آگ( هجو ع پ ہ لے ث شه ک‬ ‫شق ق ذس اط اوس گ ئے ہ و ه غ لوبى پ ش طوس‬ ‫اق تذاس اپ ٌے اوس گ ئے ث ي وصی ش ک ے س ش یذ ہ بسوى ک ہ ک‬ ‫ه یں ه غجذوں ‪:‬ک ‪،‬ی ٌ عبصػ ک ک شً ے داخل هجو ع یت ه یں ا ع الم دسپ شدٍ ک ش اٹ ھب ف بئ ذٍ عے‬ ‫آگ اوس چشاغبں ه یں سا وں هخ ظوص سک ھ ٌب‪) ،‬وغ یشٍ اگ شث ت ( اً گ ی ٹھ ک آگ یے خو ش جوک ے‬ ‫ً ے اط و ہ وا ع لن ک ب عبص شوں ک اى ک و س ش یذ ہبسوى جت وغ یشٍ۔ عوجھ ٌب ث واة ک و ک شً ے سو شي‬ ‫‪:‬د ٌ ف ق بسی ع ل هال اص ا و ظبث یخ ه ش کبح ششح ا و فب یخ هشق بح( ڈاال ۔ هبس ک ے ک ش ای ک ای ک اً ھ یں‬ ‫)‪198/3‬‬ ‫پ ش ً بم ک ے اى اوس ہ یں سک ھ تے ع ق یذٍ ک ب آً ے واپ ظ ک ے سودوں ک هشدوں سات اط وگ ث ض ‪ :‬عوال‬ ‫هشدوں ک یب و ہ یں پ کب ے وغ یشٍ د لوے‬ ‫ہ یں؟ ع ک ت آ واپ ظ ه یں دً یب سود یں ک‬ ‫ہللا ‪:‬جواة‬ ‫ہ و ک ی غے ی ہ پ ھش ہ ے‪ ،‬ک ش ب ق جض سوح ک اط و ہ ے ک ش ب ف وت ک و اً غبى جت ب‬ ‫ہللا ک ہ ہ ے ع ک تب‬ ‫دے۔ ث ھ یج ه یں دً یب ک و سوح اوس دے سک ھ ه یں ق جش ک و ج غن ب‬ ‫اط‬ ‫ک‬ ‫د یل‬ ‫ق شآى‬ ‫ه یں‬ ‫هوجود‬ ‫‪:‬ہ ے‬ ‫وهي{‬ ‫وساء‬ ‫ھن‬ ‫ث شصر‬ ‫ا‬ ‫ی وم‬ ‫}ی ج وى‬ ‫وٍ دى جظ ہ ے سہ تب پ شدٍ ای ک ک دى اط )ه یں دً یب( پ یچھے ک ے اى )ہ یں جب ے ہ و ف وت وگ جو(’’‬ ‫)‪ 100:23‬ا ووهٌوى( ‘‘) ع ک تے۔ آ ً ہ یں واپ ظ ه یں دً یب اط وٍ (گ ے جبئ یں اٹ ھبئ ے دوث بسٍ‬ ‫ای ک‬ ‫ه قبم‬ ‫پش‬ ‫‪:‬ف شهبی ب‬ ‫اً ھن{‬ ‫ال‬ ‫}ی شج وى‬ ‫)‪ 95:21‬االً ج یبء( ‘‘ ع ک تے۔ آ ً ہ یں ک ش پ لٹ واپ ظ )وا ے ہ وً ے ف وت( وٍ شک ث ے’’‬ ‫دٌ ف‬ ‫هزہ ت‬ ‫کے‬ ‫ه ت جش‬ ‫ف تبوی‬ ‫ث ضاصی ہ‬ ‫ه یں‬ ‫کھب‬ ‫‪:‬ہ ے‬ .

‫دب ضش سود یں ک ث ضسگ وں ک ہ سک ھے ع ق یذٍ ی ہ شخض جو’’‬ ‫ہ یں جبً ت ک چھ عت وٍ اوس ہ یں ہ و‬ ‫)‪: 340/11‬ا ذق بئ ق ک ٌض ششح ا شائ ق ا جذش(‘‘ہ ے۔ بجب ہ و ک بف ش شخض ای غب و‬ .