‫جمعیۃ الطلبۃ االسالمیہ باکستان‬
‫اسالمی جمعیت طلبہ پاکستان‬

‫رمضان المبارک‬

‫پہلی بات‬

‫رمضان کے حوالے سے جوبات ذھن میں آتی ھے کہ‬
‫‪ ۰‬مزے مزے کے کھانے‬
‫‪۰‬افطار میں انوع و اقسام کی چیزیں‬
‫‪۰‬سحری‬

‫‪ ۰‬سخت محنت ‪ ،‬پیاس ‪ ،‬بھوک‬
‫‪ ۰‬روحانیت ‪ ،‬گناھوں سے دور رھنا‬

‫‪ ۰‬افطار پارٹیاں ‪ ،‬دعوتیں‬
‫‪ ۰‬قرآن اور نماز‬

‫رمضان کا منصوبہ (عام)‬ ‫‪ ۰‬سحری و افطار کے سامان کی خریداری‬ ‫‪ ۰‬نوکری ‪ ،‬کاروبار کے اوقات کار کی تبدیلی‬ ‫‪ ۰‬باجماعت نماز پڑھنی ھے‬ ‫‪ ۰‬ایک قرآن ختم کرنا ھے‬ ‫‪ ۰‬کچھہ اذکار کا اھتمام‬ ‫‪ ۰‬احترام رمضان کرنا ھے(مثالَ بد گوئی‪،‬غیبت‪،‬گانے سننے‬ ‫سے احتراز کرنا وغیرہ)‬ ‫‪ ۲۷ ۰‬ویں شب کو عبادت کرنا‬ .

‫ھماری حیثیت کیا ھے؟‬ ‫ھم کلمہ ال الہ اال ّ ہللا کے علمبردار ھیں۔‬ ‫ھم ہللا و سولﷺ سے محبت کرنے والے اور اپنی جان نچھاور‬ ‫کرنے والے ھیں۔‬ ‫ھم ملک پاکستان اور پوری دنیا میں ہللا کے دین کا نفاذ چاھتے ھیں۔‬ ‫ھم سود کی لعنت ‪ ،‬کرپشن ‪ ،‬بے حیائی کے سیالب ‪ ،‬بے امنی و‬ ‫جہالت سے جان چھڑانا چاھتے ھیں۔‬ .

‫اس صورتحال میں اور اپنی حیثیت کو سامنے رکھتے ھوئے‬ ‫رمضان المبارک‬ ‫بہت اھمیت کا حامل ہے‬ ‫ھمارے لیے‬ .

‫رمضان کی اہمیت‬ .

‫رمضان کی اہمیت‬ ‫(مشکوۃ)‬ .

‫رمضان کی اہمیت‬ ‫متفق علیہ ۔ راہ عمل‬ .

‫رمضان کی اہمیت‬ ‫ترغیب ۔ زاد راہ‬ .

‫رمضان کی اہمیت‬ .

‫رمضان کی اہمیت‬ .

‫رمضان کی اہمیت‬ ‫بخاری۔ جلد‪ ۳‬ص‪۱۶۹‬‬ .

‫رمضان اور قرآن‬ ‫رمضان کے مہینے میں جو عظمت اور برکت ھے‬ ‫اس کا راز‬ ‫نزول قرآن‬ ‫میں پوشیدہ ھے‬ .

‫رمضان اور قرآن‬ .

‫رمضان کی اہمیت‬ .

‫رمضان کے اھداف‬ ‫خوف خدا پیدا کرنا‬ ‫ٰ‬ ‫تقوی میں اضافہ کرنا‬ ‫تعمیر اخالق کرنا‬ ‫عبادات کومعیاری بنانا‬ ‫روحانیت کو بڑھانا‬ ‫موت کیلے تیار کرنا‬ .

‫اہداف کا حصول کیسے؟‬ ‫‪ ۰‬نماز‬ ‫‪ ۰‬قرآن‬ ‫‪ ۰‬دعائیں‬ ‫‪ ۰‬مطالعہ اسالم‬ ‫ترک منکرات‬ ‫‪۰‬‬ ‫ِ‬ ‫‪ ۰‬اچھی عادات کو اپنانا‬ ‫‪ ۰‬امربالمعروف ونہی عن ا لمنکر کرنا‬ ‫ب قدر کا اہتمام‬ ‫‪۰‬ش ِ‬ .

‫نماز‬ ‫‪ ۰‬خشوع خضوع بڑھانا‬ ‫‪ ۰‬بامعنی یاد کرنا‬ ‫‪ ۰‬تہجد کا اھتمام کرنا‬ ‫‪ ۰‬باجماعت نماز کی پابندی کرنا‬ ‫‪ ۰‬نوافل کا اھتمام‬ ‫‪ ۰‬تراویح کا اھتمام‬ .

‫یقینافالح پائی ہے ایمان والوں نے جو‪:‬‬ ‫‪۱‬۔اپنی نمازوں میں خشوع اختیار کرتے ھیں۔‬ ‫‪ ۰‬خشوع کے کیا معنی ہیں؟‬ ‫عاجزی وانکساری۔ جھک جانے کے۔دب جانے کے۔‬ ‫‪۰‬اس کیفیت کا تعلق دل وظاہری جسمانی حالت دونوں سے‬ ‫ھے۔‬ ‫‪ ۰‬جسمانی‬ ‫ٌٌٌٌٌٌٌٌٌٌٌٌٌٌٌٌ‪۰‬دل کا خشوع‬ ‫حالت کا خشوع‬ .

‫حدیث نبوی ﷺ‬ .

‫آداب نماز‬ ‫نماز کے آداب قلبی خشوع میں مددگار ثابت ہوتے ھیں۔‬ ‫‪۰‬دائیں بائیں نہ مڑنا‬ ‫‪۰‬سر اُٹھا کر اُپر کی طرف نہ دیکھنا۔‬ ‫‪۰‬دوران نمازھلنا جلنا اور مختلف سمتوں میں نہ جھکنا۔‬ ‫‪۰‬کپڑوں کہ جھاڑنا‪،‬سمیٹنا اور ان سے نہ کھیلنا۔‬ ‫‪۰‬سجدے میں جاتے وقت جگہ صاف کرنے کی کوشش نہ کرنا۔‬ ‫‪۰‬تن کر کھڑے نہ ہونا‬ ‫‪۰‬بہت بلند آواز سے قرآت نہ کرنا‬ ‫‪۰‬قرآت میں گانے جیسی آواز پیدا نہ کرنا۔‬ ‫‪۰‬جمائیاں لینا‪،‬ڈکاریں نہ مارنا‬ ‫‪۰‬جلدی جلدی نمازنہ پڑھنا‬ ‫‪ ۰‬بار بار ھاتھوں کہ حرکت نہ دینا۔‬ .

‫‪۰‬ان ظاھری آداب کے ساتھہ یہ چیز بھی بڑی اہمیت رکھتی‬ ‫ھے کہ نمازی جان بوجھہ کر غیر متعلقہ باتیں سوچنے‬ ‫سے پرھیز کرے۔اگر بال ارادہ ذہن میں خیاالت آئیں تو‬ ‫انہیں پروان نہ چڑھاے۔‬ ‫‪۰‬نمازی کی پوری کوشش یہ ہو کہ نماز کے وقت اس کا دل‬ ‫ہللا کی طرف متوجہ ھواور جو کچھہ وہ زبان سے کہہ‬ ‫رھا ھو وھی دل سے بھی عرض کرے۔‬ .

‫حدیث نبویﷺ‬ ‫حضرت ابوھریرہ رضی ہللا تعا ٰ‬ ‫لی عنہ نبی کریمﷺ سے روایت‬ ‫کرتے ھیں کہ آپﷺ نے فرمایا‪:‬‬ ‫تم میں سے اگر کسی کے دروازے پر نہر بہہ رہی ھو‪،‬جس میں‬ ‫وہ روزانہ پانچ مرتبہ نہاتا ھوتو بتاؤ اسکے جسم پر کچھہ بھی‬ ‫میل کچیل باقی رھے گا؟صحابہ اکرام نے فرمایا اسکے جسم پر‬ ‫تو ذرا بھی میل کچیل نہیں رھے گا۔آپﷺ نے فرمایا یہی‬ ‫ٰ‬ ‫تعالی ان نمازوں کے‬ ‫حال پانچ وقت کی نمازوں کا ھےہللا‬ ‫( بخاری و مسلم)‬ ‫ذریعے گناہوں کو مٹا دیتا ہے۔‬ .

‫حدیث نبویﷺ‬ ‫حضرت ابو ھریرہ رضی ہللا ٰ‬ ‫تعالی سے روایت ھیکہ‬ ‫آپﷺ نے فرمایا‪:‬‬ ‫بندہ اپنے پروردگار سے سب سے قریب اس وقت ھوتا ھے‬ ‫جب وہ سجدہ کی حالت میں ھو۔‬ ‫مسلم ترغیب۔ ‪۱۴۵‬‬ .

‫قرآن سے تعلق‬ ‫‪ ۰‬قرآن کا کچھہ حصّہ حفظ کرنا‬ ‫(آخری ‪ ۲۰‬صورتیں یا کوئی اور حصّہ)‬ ‫‪ ۰‬مطالعہ ترجمہ و تفسیر‬ ‫(کوئی حصّہ منتخب کریں یا موضوع)‬ ‫‪ ۰‬تجوید کا اھتمام کرنا‬ ‫ترتیل قرآن کرنا‬ ‫‪۰‬‬ ‫ِ‬ .

‫حدیث نبویﷺ‬ ‫حضرت سالم رضی ہللا عنہ اپنے والد عبدہللا بن عمر رضی‬ ‫ہللا عنہ سے روایت کرتے ھیں کہ‪:‬‬ ‫دو آدمی ھی رشک کے قابل ھیں ایک وہ جسے ہللا نے قرآن‬ ‫کا علم دیا تو وہ اسے پڑھتا اور پڑھاتا اور اس پر عمل‬ ‫کرتا ھے رات کے اوقات میں بھی اور دن کے اوقات میں‬ ‫بھی۔ دوسرا وہ جسے ہللا نے مال دیا اور وہ اسے رات و‬ ‫دن کے اوقات میں خرچ کرتا ھے۔‬ ‫مسند احمد‬ .

‫مطا لعہ قرآن کے لیئے مشورے‬ ‫‪۱‬۔ نیت صاف ھو۔ یعنی ھدایت حاصل کرنے کی غرض سے‬ ‫قرآ ن کو پڑھا جائے۔‬ ‫‪۲‬۔ ذھن کو صاف کر کے مطالعہ شروع کیا جائے۔‬ ‫‪۳‬۔ پرانے تصورات‪،‬عصبیتیں‪،‬فرقہ وارانہ ذھن سے دل و دماغ‬ ‫کو پاک کر لیا جائے۔‬ ‫‪۴‬۔ بار بار مطالعہ کریں ‪ ،‬کاپی و پنسل کے ساتھہ‬ ‫‪۵‬۔ جو سواالت اٹھیں ان کو لکھہ لیں اور دوبارہ مطالعہ کریں‬ ‫آگے ان سواالت کا جواب مل جائیگا۔‬ .

‫اذکار و دعائیں‬ ‫‪ ۰‬ھماری دعائیں کیا ھوں‬ ‫‪ ۰‬نمازوں میں ‪ ،‬تالوت قرآن میں ‪ ،‬افطار میں ‪ ،‬راتوں کو اٹھہ کر‬ ‫‪۰‬دعا ئیں آنسو کے ساتھہ‬ ‫‪ ۰‬صبح و شام ‪ ،‬سوتے جاگتے ‪ ،‬کھا تے پیتےاذکار کا اھتمام‬ .

‫حدیث نبویﷺ‬ ‫آپ ﷺ نے فرمایا ‪:‬‬ ‫سات آدمیوں کو ہللا ٰ‬ ‫تعالی روز محشر اپنے سائے میں رکھے‬ ‫گا ان میں سے اایک وہ جو تنہائی میں ہللا کو یا د کرے‬ ‫اور اسکی آنکھوں میں آنسو آ جائیں۔‬ ‫ابو ھریرہ رضی ہللا عنہ ۔ بخاری‬ .

‫مطالعہ اسالم‬ ‫‪ ۰‬اسالمی کتب کا مطا لعہ کرنا‬ ‫‪ ۰‬اسٹڈی سرکل اور لیکچرز میں حاضرھونا‬ ‫‪Brows on Islamic web sites۰‬‬ ‫‪ ۰‬اسالمک آڈیو ‪ ،‬وڈیو سی ڈیز سننا اور دیکھنا‬ .

‫معروف کو اپنانا‬ ‫ت افطار میں بالنا‬ ‫‪ ۰‬دعو ِ‬ ‫‪ ۰‬صلہ رحمی کرنا‬ ‫‪ ۰‬غرباء و مساکین سے اچھا سلوک کرنا‬ ‫‪ ۰‬لوگوں کا دکھہ بانٹنا‬ ‫‪ ۰‬معاف کردینا‬ ‫‪ ۰‬درگذر کرنا‬ ‫‪ ۰‬بحث و مباحثوں اور فروعیات سے دور رھنا‬ .

‫ترکِ منکرات‬ ‫‪ ۰‬جھوٹ نہ بولنا‬ ‫‪ ۰‬غیبت سے احتراز کرنا‬ ‫‪ ۰‬غصّہ ترک کرنا‬ ‫‪ ۰‬ریڈیو‪ ،‬ٹی وی ‪،‬انٹرنیٹ کا غلط استعمال چھوڑنا‬ ‫‪ ۰‬فضول گوئی ‪ ،‬مذاق سے پرھیز کرنا‬ ‫‪ ۰‬غیر ضروری شاپنگ سے احتراز‬ ‫‪ ۰‬لغویات سے پرھیز کرنا‬ ‫‪ ۰‬بد نظری سے بچنا (غضِّ بصر)‬ .

‫صحت کا خیال‬ ‫حضورﷺکی س ّنت ھے کہ‬ ‫کم کھانا‬ ‫کم سونا‬ ‫کم بولنا‬ ‫‪ ۰‬سبزی و پھلوں پر گزارا کریں‬ ‫‪ ۰‬ہلکی ورزش کا اھتمام کرنا‬ ‫‪ ۰‬سگریٹ یا کوئی نشہ کرتے ھوں تو اسے چھوڑ دینا‬ .

‫فریضہء اقام ِ‬ ‫ت دیں‬ ‫دعوت آپکے عمل سے‬ ‫دعوت آپکے گفتار سے‬ ‫دعوت اخالق و کردار سے‬ ‫دعوت کی تڑپ اپنے اندر پیدا کرنا‬ ‫امر باالمعروف ونہی عن المنکر‬ .

‫ش ِ‬ ‫ب قدرکی تالش‬ ‫ب بیداری کرنا‬ ‫‪ ۰‬آخری عشرہ کی طاق راتوں میں ش ِ‬ ‫‪ ۰‬انہماک اور جوش کو بڑھانا‬ ‫‪ ۰‬اجتماعی و انفرادی پروگرامات کا اھتمام کرنا‬ ‫‪ ۰‬ھو سکے تو اعتکاف کا اھتمام کرنا‬ .

‫شب قدر کیا ھے؟‬ .

‫آخری بات‬ ‫استقبال رمضان پر لیکچر سنے‪،‬‬ ‫ِ‬ ‫منصوبہ رمضان پر ورکشاپ میں شریک ھوا‬ ‫ت رمضان کو سیکھا ‪ ،‬سمجھا ۔۔۔منصوبہ بندی کی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔‬ ‫اہمی ِ‬ ‫لیکن‬ ‫دل و دماغ پر ٰ‬ ‫شیطن نے پردہ ڈال دیا اور میں ایک بارپھر‬ ‫اٌّّ پنے دشمن کا شکار ھوگیا ۔‬ ‫ٰ‬ ‫شیطن نے مجھے ہالک کر ڈاال‬ .

‫ایک سوال‬ ‫میرا اپنے آپ سے‬ ‫کیا میں ھالک ھونا چاہتا ھوں‬ ‫یا‬ ‫کامیاب‬ .

‫حدیث نبویصل ہللا علیہ وسلم‬ ‫ایک حدیث کا حصّہ ھے کہ‪:‬‬ ‫حضرت ٰ‬ ‫جبرئیل امین علیہ السالم نے دعا فرمائی کہ‬ ‫تباہ و برباد ھوجائے وہ شخص جس نے رمضان کا مہینہ پایا‬ ‫اور اپنی مغفرت نہ کروا سکا۔‬ ‫اس پر حضورصل ہللا علیہ وسلم نے فرمایا ”‬ ‫آمین‬ ‫“‬ .

‫اپنا احتساب روزانہ‬ ‫جس کا آج‬ ‫گزشتہ کل سے‬ ‫بہتر نہیں وہ‬ ‫ھالک ھؤا ۔‬ ‫(حدیث کا مفہوم)‬ .

‫•‬ ‫•‬ ‫•‬ ‫•‬ ‫اے ہللا! میں دنیا اور آخرت مین تیری طرف سے عافیت‬ ‫اوردرگزری کا سوال کرتا ہوں۔‬ ‫اے ہللا! میں اپنے دین‪ ،‬دنیا اور اپنے اہل و اعیال اور مال میں‬ ‫تیری معافی اور عافیت کا طلبگار ہوں۔‬ ‫اے ہللا! میرے رازوں کی پردہ پوشی فرما اور میرے خوف کو‬ ‫امن سے بدل دے۔‬ ‫اے ہللا! مجھے آگے پیچھے‪ ،‬دائیں بائیں اور اوپر سےاپنی حفاظت‬ ‫عطا کر اور میں تیری عظمت کے ذرئعیےپناہ طلب کرتا ہوں کہ‬ ‫نیچے سے اچانک ھالک کر دیا جاؤں۔‬ ‫آمین ثمہ آمین‬ ‫(ابو داؤد۔ابن مآجہ)‬ .