You are on page 1of 93

‫اثارالنبوية‬

‫ظ‬
‫ہ‬
‫ہ‬
‫م‬
‫ح‬
‫م‬
‫ل‬
‫ابو بی یں م فوظ آثار ا ن بویہ (ﷺ) کے حوالے سے اثک ا م القات‬

‫ظ‬
‫ہ‬
‫ح‬
‫م‬
‫ل‬
‫ابو بی یں م فوظ آثار ا ن بویہ‬
‫(ﷺ) کے حوالے سے اثک‬
‫اہم مالقات‬

‫عالمہ ڈاکٹر کوکب نورانی اوکاڑوی‬

‫پرنس ڈاکٹر الشیخ احمد بن االمام محمد الہالل الخزرجی‬

‫تخرپر‪ :‬شیخ عت یق الرحمن‪ ،‬انو ظہبی‬

‫‪Okarvi.com‬‬

‫زیر نظر تحریر عالمہ ڈاکٹر کوکب بورانی اوکاڑوی کی متحدہ عرب امارات کے یرنس ڈاکٹر الشتخ‬
‫احمد بن االمام محمد الہالل الحزرجی کے ساتھ مالقات کا احوال ہے۔‬

‫ظ‬
‫ہ‬
‫م‬
‫یہ مالقات مورخہ ‪ 31‬اگست ‪2014‬ء میں ان کے محل واقع ال بطین انو بی یں وقوع پذپر ہونی۔‬

‫‪Okarvi.com‬‬

‫ش‬
‫ل‬
‫ڈاکٹر ا یخ احمد الخزرجی‬

2014 ‫ اگست‬31

Okarvi.com

‫ڈاکٹر الشیخ احمد الخزرجی کا نعلق متحدہ عرب امارات کے اثک معزز یربن‬
‫خاثدان سے ہے۔ ان کا شمار صدبوں سے اثک قاثل احٹرام قنیلہ خزرجی سے‬
‫کیا خاثا ہے حو اپبی شرافت‪ ،‬ذہاپت اور لیافت میں اثک مسنید اور خاص پہحان‬
‫کا خامل ہے۔ ان کے آثاؤ اخداد انص ِار مدپنہ کے قنیلہ خزرج سے نعلق رکھتے‬
‫ہیں حو وہاں سے ہحرت کرکے متحدہ عرب امارات کی رثاست ابوظہبی میں‬
‫سکوپت اخنیار کر گتے تھے۔ اس خاثدان کے آثاؤ اخداد ‪1958‬ء سے عدلنہ سے‬
‫وانسنہ رہے ہیں۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫اور الشتخ احمد بن االمام کے والد ِ محٹرم الشیخ محمد الخزرجی دپبی کے پہلے جج ثامزد ہوے تھے۔ نعد میں ان‬
‫کے والد ِ محٹرم محکمہ اوقاف اور اسالمی امور کے وزیر مقرر ہوے۔ اس کے ساتھ ساتھ اپہوں نے وزیر قابون‬
‫اور نقافبی وریہ کی کمنبی کے شریراہ کے طور یر تھی فرانض اتحام د پتے۔ ان کی میالی کارکردگی اور نے پیاہ‬
‫خدمات کے ِصلہ میں خکومت متحدہ عرب امارات ان کے اعزاز میں ڈاک ثکٹ تھی سا نع کتے‬
‫‪Okarvi.com‬‬

Okarvi.com

‫الشتخ احمد الحزرجی‪ ،‬اس وفت خکومت ِ متحدہ عرب امارات‬
‫کی خاپب سے دپیا تھر کے انصار قنیلہ سے نعلق رکھتے والے‬
‫لوگوں کے ثگران چ یف کے عہدہ خلیلہ یر قایز ہیں۔ اس‬
‫سلسلے میں وہ قنیلہ انصار کے لوگوں کی قالح و پہ بود کے لتے‬
‫س‬
‫س‬
‫م‬
‫ہ‬
‫م‬
‫ل‬
‫م ل خدوجہد یں صروف ر ہتے یں۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫میدرجہ ثا ال خاثدانی نعارف کے ساتھ ساتھ الش‬
‫پ‬
‫پ‬
‫ک‬
‫ی‬
‫ہ‬
‫م‬
‫ل‬
‫ث‬
‫ھ‬
‫رسول‬
‫کو‬
‫ان‬
‫ان‬
‫ح‬
‫ہ‬
‫ی‬
‫اور‬
‫ں‬
‫ی‬
‫ے‬
‫ت‬
‫ر‬
‫ان‬
‫ح‬
‫گ‬
‫ا‬
‫اور‬
‫رد‬
‫ق‬
‫ک‬
‫ا‬
‫ی‬
‫زرج‬
‫ح‬
‫ا‬
‫مد‬
‫ا‬
‫خ‬
‫ت‬
‫ح‬
‫ل‬
‫ہ‬
‫ہ‬
‫ِ‬
‫ثاک ﷺ کے ”آثار و تٹرکات“ کے محافظ و ثگران کی ثایرکت سعادت کی وجہ سے نصیب ہونی ہے۔ اس وفت اثک کثٹر‬
‫’محموعہ آثار الن بویہ‪ ،‬پبی کریم ﷺ کی ذات سے وانسنہ آثار‘ ان کے ثاس موحود ہیں یہ آثار کب اور کس طرح ان ثک پہتچے؟‬
‫َ‬
‫ہ‬
‫س‬
‫ان کی اصلیت اور سحانی کو کیسے ی کرھا خا کیا ہے؟ کیا ان تمام آثار کی اسیاد ان کے ثاس موحود یں؟ کس طرح یہ خاثدان‬
‫ان آثار کی حقاظت کرثا ہے؟ اسی طرح کے پہت سے سواالت عالمہ ڈاکٹر کوکب بورانی اوکاڑی کی مالقات میں موضوع‬
‫ن‬
‫ف‬
‫ی‬
‫ص‬
‫ہ‬
‫پ‬
‫گفیگو رہے۔ آ پتے ان کی ل خا تے یں۔‬

‫ڈاکٹر عالمہ کوکب بورانی اوکاڑوی‪ ،‬اثک تین رکبی وقد کے ہمراہ الشتخ الحزرجی کے ہاں ان کے محل وافع ال یطین ابوظہبی پہتچے۔ فیل ازبں‬
‫اپہوں نے وقد کے ہمراہ ’آثار الن بویہ شرنف‘ کی زثارت کی سعادت خاصل کی۔ زثارت کے دوران عالمہ کوکب نورانی آثار شرنفہ کو اپبی آثکھوں‬
‫سے لگاے رونے رہے اور اپبی نے پیاہ محیت و عفیدت کی شرساری کے عالم میں رہے۔ عالمہ اوکاڑوی صاحب ا پتے اور ا پتے وقد کی‬
‫خاپب سے ا پتے مٹزثان ڈاکٹر الشتخ احمد الحزرجی کے مم بون و میسکر ہوے اور ان کے اور ان کے خاثدان کے لتے اّٰللہ کے حضور ُدعا‬
‫فرمانی۔ نعد ازاں گفیگو کا ثاقاعدہ آعاز ہوا۔‬
‫ڈاکٹر عالمہ کوکب بورانی اوکاڑوی نے فیلہ الشتخ احمد الحزرجی کی خدمت ِ عالنہ میں اپبی اور ا پتے والد ِ محٹرم محدد مسلک ِ اہ ِل‬
‫سیّت حطیب ِ اعظم حصرت موالثا محمد سف یع اوکاڑوی رحمۃ اّٰللہ نعالی علنہ کی ط یع سدہ کحھ ک یب و خراثد کے اثگریزی یراحم تیش کتے‪ ،‬جن میں‬
‫’اذان اور ُدرود شرنف‘ اسالم کی پہلی عید‪ ،‬عید میالد النبی ﷺ‪ ،‬بواب العیادات الی ارواح االموات وغٹرہ قاث ِل ذکر ہیں۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫ڈاکٹر عالمہ کوکب بورانی اوکاڑوی نے فیلہ الشتخ احمد‬
‫الحزرجی کی خدمت ِ عالنہ میں اپبی اور ا پتے والد ِ محٹرم محدد‬
‫ع‬
‫س‬
‫ی‬
‫ف‬
‫ظ‬
‫ح‬
‫مسلک ِ اہ ِل سیّت حطیب ِ ا م صرت موالثا محمد ع اوکاڑوی‬
‫رحمۃ اّٰللہ نعالی علنہ کی ط یع سدہ کحھ ک یب و خراثد کے اثگریزی‬
‫یراحم تیش کتے‪ ،‬جن میں ’اذان اور ُدرود شرنف‘ اسالم کی پہلی‬
‫عید‪ ،‬عید میالد النبی ﷺ‪ ،‬بواب العیادات الی ارواح االموات‬
‫وغٹرہ قاث ِل ذکر ہیں۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫فیلہ الشتخ احمد الحزرجی نے ان کیب کو نے خد نشید کیا اور حواہش ظاہر کی کہ وہ کس طرح ان کیب کو زثادہ نعداد میں خاصل کرسکتے ہیں ثاکہ وہ ان‬
‫ن‬
‫کو ا پتے م یعلقین و مرثدبن میں قشیم کرسکیں۔‬
‫ً‬
‫عالمہ اوکاڑوی نے فیلہ الشتخ احمد الحزرجی کو پیاثا کہ کم و تیش ‪ 28‬کیب کے وہ مصیف ہیں اور فرپیا اپبی ہی نعداد میں ان کے والد ِ محٹرم کی کیب اب ثک‬
‫ُ‬
‫الکھوں کی نعداد میں سا نع ہوخکی ہیں اور پہت زثادہ شراہی خانی ہیں۔ راقم عرض کرثا ہے کہ ان کی تحریر‪ ،‬سلیس اور سادہ مگر ا پتے اثدر اثک یر معبی عیارت‬
‫رکھبی ہے اور یڑ ھتے واال اس سے ایر لتے نغٹر پہیں رہیا۔ عالوہ ازبں تمام کیب میں‪ ،‬مسنید حوالہ خات سے تحث کی گبی ہے اور صحتح اسالمی عقاثد‪ ،‬اضول اور‬
‫فرانض کے حوالے سے پہت زثادہ رہ تمانی ثانی خانی ہے‬

Okarvi.com

‫۔‬

‫عالمہ اوکاڑوی کے والد ِ محٹرم حضرت موالپا محمد شف بع اوکاڑوی کا‬
‫اثک اعزاز ان کا محضوص میالی اثد ِاز حطاپت تھا۔ ان کے حطیات‬
‫پ‬
‫کی محاقل میں سامعین روزایہ میلوں کی مسافت طے کرکے ہتحتے‬
‫تھے اور ا پتے اتمان کو ثازہ کرنے‪ ،‬عش ِق رسالت مآب ﷺ کی حوش‬
‫بو سے اپبی روح کو معظر کرنے۔ ان کا امنیاز ہے کہ اپہوں نے‬
‫‪ 38‬سالہ عہد حطاپت میں اتھارہ ہزار سے زاثد‬
‫)‪(Documented‬یڑے اچیماعات سے حطاب کیا حوکہ‬
‫ات حمعہ اور محیلف نقرپیات کے‬
‫اثک عہد ساز رکارڈ ہے۔ اچیماع ِ‬
‫ہزاروں حطیات اس کے عالوہ ہیں۔‬
‫فیلہ الشتخ احمد الحزرجی نے اوکاڑوی مشن کی خدمات کو پہت شراہا‬
‫اور دعاے حٹر کی۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫اپہوں نے عالمہ اوکاڑوی کو تیش کش کی‬
‫رون ممالک دورہ خات‬
‫کہ وہ ان کے ساتھ تٹ ِ‬
‫میں اثک م یصر اور رہ تما کی چین یت سے شرکت‬
‫کرسکیں بو یہ ان کے لتے اعزاز ہوگا۔ عالمہ‬
‫اوکاڑوی نے ان کی اس تیش کش کو ف بول کیا‬
‫رسول کریم ﷺ کے‬
‫اور کہا کہ دبن و ملت اور ِ‬
‫تٹرکات کی خدمت کے لتے وہ ہمہ وفت خاضر‬
‫ہیں عال مہ اوکاڑوی نے فیلہ الشتخ احمد الحزرجی‬
‫کو پیاثا کہ ان سے مالقات کا مفصد یہ ضرف‬
‫’آثار الن بویہ‘ کی زثارت سے مشرف ہوثا تھا ثلکہ‬
‫ان م یعدد سوا الت کا حواب تھی خاصل کرثا تھا‬
‫حو ان آثار الن بویہ سے میاسیت رکھتے ہیں‪،‬‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫ؤمن قَا َل بَلَى َولَ ِكن ِليَط َمئِ َّن قَل ِبي‬
‫َيف تُح ِيي ال َموتَى قَا َل أ َ َولَم ت ُ ِ‬
‫ب أ َ ِرنِي ك َ‬
‫برا ِهي ُم َر ِ‬
‫َو ِإذ قَا َل ِإ َ‬

‫‪Okarvi.com‬‬

‫‪Wa 'Iz Qaala 'Ibraaheemu Rabbi 'Arinee Kaiefa Tuĥyil Mautaa Qaala 'Awalam Tu'min Qaala Balaá Wa Laakil‬‬‫‪Liyaţma'inna Qalbee‬‬
‫عالمہ اوکاڑوی نے فر ِآن کریم کا حوالہ د پتے ہوے فرماثا کہ حصرت ایراہیم علنہ السالم نے رب العالمین سے کہا ت ھا کہ ”واذ قال ایراہیم رب ارنی ک یف تحی‬
‫لی‬
‫المونی قال اولم بومن قال ثلی ولکن ظمین قلبی‘‘)سورۃ ال یقرہ‪ :‬آپت تمٹر‪ ( 260‬اور ثاد کرو حب(حصرت) ایراہیم علنہ السالم نے ا پتے رب سے کہا‪” :‬اے‬
‫مٹرے رب محھے دک ھادتحتے کہ آپ کس طرح ُمردوں کو زثدگی تخشتے ہیں‪ ،‬فرماثا‪ ،‬کیا تمیں نقین پہیں ہے؟ ایراہیم علنہ السالم نے حواب دثا کہ ہاں ہے مگر ا پتے‬
‫دل کی مط بوطی ‪ /‬نسلی کے لتے انسا خاہیا ہوں‬
‫اسی پیاطر میں‪ ،‬میں آپ سے کحھ سواالت بوحھیا خاہیا ہوں ثاکہ محھ شمیت ہر وہ عاس ِق رسول حو ان آثار الن بویہ کی زثارت سے ف یض ثاب ہوثا ہے‪ ،‬اس کا قلب و‬
‫ذہن کسی سک و سنہ میں منیال یہ رہے اور وہ بوری اتمانی محیت و عفیدت کے ساتھ ان ثادر آثار کی زثارت کربں اور ان کے ف بوض و یرکات ا پتے دامن میں‬
‫شمیٹ سکیں۔‬

‫الذى إكرام ما نسب به‬
‫عرنی قول ہے کہ‪ :‬الذی اکرام ما نسب یہ۔ نعبی ہر وہ حٹز جس کی نسیت رسول اّٰللہ ﷺ کے‬
‫ساتھ ثالواسطہ ثا ثالواسطہ ہے‪ ،‬اس کی عزت ہم کرنے ہیں اس لحاظ سے ان ’آثار الن بویہ‘ کو‬
‫ن ً‬
‫ث‬
‫ک‬
‫ھ‬
‫ہم عزت و اکرام سے ہی د یں گے اور قنیا اس کے ف بوض و یرکات سے پہرہ مید ہوں گے۔‬

‫‪Okarvi.com‬‬

‫ول ثاک کا ثال میارک ثا تٹرک ہو وہ‬
‫امام ابن سٹربن علیہ الرحمہ کا اثک قول ہمارے لتے رہ تمانی فرماثا ہے۔ جس کے ثاس رس ِ‬
‫دپیا و مافیھا (دپیا اور حو کحھ اس میں ہے) سے پہٹر ہے۔‬
‫عالمہ اوکاڑوی نے فیلہ الشتخ احمد الحزرجی کو پیاثا کہ ابوظہبی آنے سے فیل میں نے مدپنہ م بورہ میں رسول اّٰللہ ﷺ کے روضہ‬
‫ً‬
‫اظہر یر ثالحضوص یہ دعا کی کہ میں ”آثار الن بویہ“ کی زثارت کے لتے ابوظہبی خانے کا ارادہ رکھیا ہوں‪ ،‬اگر یہ آثار اصال آپ ﷺ‬
‫کی ذات ِ اقدس سے وانسنہ ہیں بو یہ سقِر زثارت مٹرے لتے میارک اور آسان ہو۔‬
‫ً‬
‫عالمہ اوکاڑوی اور فیلہ الشتخ احمد الحزرجی کے درمیان گفیگو (حو نقرپیا ڈھانی تین گ ھنتے ثک خاری رہی) کا خالضہ ذثل میں تیش‬
‫کیا خارہا ہے۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

Okarvi.com

‫عالمہ اوکاڑوی ‪’ :‬آثار الن بویہ‘ کی اہمیت و خاصیت کے تیش نظر کیا‬
‫آپ نے اس کی نفصیل و حقابق کو کسی کیاب کی سکل میں محفوظ کیا‬
‫ہے؟‬
‫ً‬
‫الشتخ الحزرجی‪ :‬جی ہاں‪ ،‬ہم نقنیا اس کی خاص اہمیت سے بوری طرح‬
‫م‬
‫آ گاہ ہیں‪ ،‬اور اس سلسلے میں اثک کمل اور خامع کیاب ”اآلثار الن بویہ‬
‫فی الحزایۃ الحزرحنہ“ کی ثدوبن خاری ہے ‪-‬اس کیاب میں رسول اّٰللہ ﷺ‬
‫م‬
‫کی ذات سے وانسنہ ہر اثک آثار یر ُخدا ُخدا کمل تحث کی گبی ہے اور‬
‫ہ پ‬
‫ہ‬
‫ت‬
‫پیان کیا گیا ہے کہ کس طرح نصدنقی اسیاد کے ساتھ یہ م ثک حی‬
‫ہیں۔ کیاب میں اس پہلو یر تھی روسبی ڈالی گبی کہ ہم کیسے ان ”آثار “‬
‫کو محفوظ کرنے ہیں اور کس طر نقے سے ہم ان کو ان کی اصلی ہن یت میں‬
‫رکھتے کی یرکیب کرنے ہیں۔‬

‫‪Okarvi.com‬‬

‫ً‬
‫پ‬
‫ازراہ کرم‪ ،‬ہماری سہولت کے لتے نفصیل سے ہمیں پیا پتے کہ کس طرح یہ ’آثار شرنفہ ‘آپ ثک ہتحتے؟ میال کیا‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ِ :‬‬
‫مونے میارک حصرت انس رضی اّٰللہ غنہ سے آپ ثک پہتچے؟‬
‫الشتخ الحزرجی ‪:‬جی پہیں‪ ،‬یہ ’آثار شرنفہ ‘حصرت انس رضی اّٰللہ غنہ سے ہم ثک پہیں پہتچے‪ ،‬اصل میں یہ آ ثار‪ ،‬انص ِار مدپنہ اور اہ ِل‬
‫پ یت کے محیلف خاثدابوں میں علتحدہ علتحدہ موحود تھے۔ ‪2007‬ء اور ‪2008‬ء میں اثک قاثل ذکر نعداد میں اہ ِل انصار اور اہ ِل پ یت کے افراد‬
‫رسول ثاک ﷺکی حواب میں زثارت کی اور ان سے ثالواسطہ یہ ہداپت خاصل کی کہ ان کے ثاس حو تھی ’آثار شرنفہ ‘موحود ہیں وہ سب کے‬
‫نے ِ‬
‫سب احمد الحزرجی (نعبی محھے )من یقل کرد پتے خاتیں اور بوں الحمد ّٰللہ ان دو سالوں میں نعبی ‪2007‬ء اور ‪2008‬ء میں ‪40‬سے زثادہ ’آثار‬
‫ن ہ ث م‬
‫پ‬
‫م‬
‫پ‬
‫ی‬
‫ک‬
‫ہ‬
‫ل‬
‫م‬
‫م‬
‫ہ‬
‫م‬
‫م‬
‫ت‬
‫ن‬
‫ک‬
‫ث‬
‫شرفہ ‘ م ک ل اسیاد کے ساتھ تچے۔ ھر ‪2009‬ء یں اس یں کونی اصافہ یں ہوا کن ‪2010‬ء یں ا ک ثٹر عداد یں حو‬
‫‪2007‬ء اور ‪2008‬ء کی محموعی نعداد سے تھی زثادہ ہے مزثد ’آثار شرنفہ ‘ہم ثک پہتچے اور یہ سلسلہ اب ثک خاری ہے۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫‪2010‬ء میں مملکت ِِ سعودی عرب سے نعلق رکھتے والے اثک امٹر اور اہم خاثدان کی اثک ممیاز سحصیت نے اثک وقد ہمارے ثاس‬
‫تھتحا۔ اصل میں وہ سحصیت یہ خاپیا خاہبی تھی کہ ہم ان ’آثار الن بویہ‘ کو کس نظم اور یرپ یب سے رکھتے ہیں؟ اور اس ثات کی نسلی و نشقی‬
‫خا ہتے تھے کہ آثا ہم ان کی حقاظت کا فرنضہ تخونی اجشن اثداز سے کرنے کی اہلیت رکھتے ہیں کہ پہیں؟ ان تمام عوامل کی سافی نسلی و‬
‫اطمنیان خاصل کرنے کے نعد اس ممیاز سحصیت نے ہمیں پیاثا کہ اس کے ثاس لگ ت ھگ ‪ 300‬کی نعداد میں محیلف ثادر ”آثار الن بویہ“‬
‫خالفت ِ عیماپنہ کی سید کے ساتھ شرتمہر موحود ہیں اور وہ یہ سب ہمیں من یقل کرثا خا ہتے ہیں‪ ،‬ان ’آثار الن بویہ‘ کو اپہوں نے اب ثک ’زیر‬
‫زمین‘ اثک پہت محفوظ اثداز میں حھیاثا ہوا ت ھا (ثاکہ خکومت ِ سعودی عرب ان یر قانض یہ ہوخاے) چبی کہ اس سحصیت کے حھونے ت ھانی کو‬
‫تھی اس کا ادراک پہیں ت ھا۔ چیاں جہ اپہوں نے یہ ’آثار الن بویہ‘ ہمیں اثک محیاط طر نقے سے من یقل کرنے شروع کرد پتے اور ثاخال یہ سلسلہ‬
‫ُ‬
‫خاری ہے۔ ان کے عالوہ ‪2010‬ء میں اور پہت سے خاثدابوں کے افراد نے ہم سے رانطہ کیا اور پہت سے ’آثار الن بویہ‘ ہمارے ثاس من یقل‬
‫رسول ثاک ﷺ سے خاملیا ہے۔‬
‫کتے‪ ،‬ان ’آثار الن بویہ‘ کا سحرہ خار ثا ثاتچ واسطوں سے ِ‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬کیا میں بوحھ سکیا ہوں کہ جن افراد کو حواب میں رسول اّٰللہ ْﷺ سے یہ ہداثات ملی ہیں اپہوں نے یہ ’آثار‬
‫م‬
‫م‬
‫الن بویہ‘ کمل اسیاد کے ساتھ آپ کے ثاس رکھواے ثا آپ کو تحفہ دنے؟؟ مٹرا مفصد یہ ہے کیا یہ آ ثار ان کے ثاس کمل پ بوت کے ساتھ‬
‫محفوظ تھے؟‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫م‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬جی ہاں‪ ،‬یہ تمام آثار کمل صحت اور پ بوت کے ساتھ ہم ثک پہتچے ہیں۔ کحھ آثار کا یرثک رکارڈ (ثارتحی‬
‫ع‬
‫پ‬
‫ہ‬
‫رسول‬
‫سلسلہ)ثالواسطہ حصرت سیدثا عوث اال ظم عیدالقادر چیالنی رضی اّٰللہ غنہ ثک ہتحیا ہے‪ ،‬اگرجہ تمام ’آثار الن بویہ‘ کا پیا میں ‪ 100‬فی صد ِ‬
‫م‬
‫ثاک ﷺ ثک بورے وبوق سے پہیں ملیا۔ ثاہم ثانعین اور نعض صحایہ رضی اّٰللہ عنہم ثک ہم کمل صحت اور نقین سے ان کے اصل ہونے کی‬
‫ً‬
‫ت‬
‫پ‬
‫ی‬
‫ہ‬
‫پ‬
‫ن‬
‫نصدبق کرسکتے ہیں۔ عالوہ ازبں ہمارے ثاس نعض ”آثار“ میال ’ذفٹرہ شرف‘ ا نسے ھی موحود یں جن کی صحت کا بوت بی کر م ﷺ کی ذات‬
‫رسول ثاک ﷺ نے ججۃ الوداع کے موفع یر حصرت ظلجہ رضی اّٰللہ غنہ کو عطا فرمانے تھے۔ حو اپہوں نے ہدی ًۃ‬
‫ثک خاملیا ہے کہ یہ مونے میارک‪ِ ،‬‬
‫حصرت ام سلیم رضی اّٰللہ عنہما کو دے د پتے تھے۔ یہ مونے میارک ان کے خاثدان سے سیدثا عیدالقادر چیالنی رحمۃ اّٰللہ علنہ ثک پہتچے اور ان کی‬
‫اوالد سے ہم ثک پہتچے۔‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬کیا اس کا مطلب ہے کہ یہ ذفٹرہ شرنف (مونے میارک) آپ کے خاثدان کے ثاس خال ہی میں پہتچے ہیں؟‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬جی ہاں‪ ،‬یہ ہم ثک قنیلہ انص ِار مدپنہ‪ ،‬حوکہ ہمارے یرادری سے آے ہیں‪ ،‬اس کے نعد الشتخ الحزرجی نے اپبی زی ِر‬
‫ط یع کیاب ”آثار الن بویہ فی خزایۃ الحزرحنہ“ کے یروف میگواے‪ ،‬یہ کیاب اپیدأ عرنی زثان میں مدون کی گبی ہے ثاہم نعد میں اس کے دثگر زثابوں‬
‫ً‬
‫ت‬
‫س‬
‫ن‬
‫ث‬
‫م‬
‫ی‬
‫میال ا گریزی اور فرا سی یں ھی کیا خاے گا۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫م‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬اگرجہ اس موضوع یر ہمیں دثگر کیب تھی علماے دبن سے ملبی ہیں مگر مٹری دانست میں اہم ثات ’آثار الن بویہ‘ کے نعارف کے نعد ان کی کمل صحت اور‬
‫حوالہ خات کا ثذکرہ پہاپت ضروری ہے ثاکہ کسی کے دل میں ان کے خالف کونی ساپنہ ثک یہ آے۔ آپ تخونی خانے ہیں کہ ہم عساق ِان رسول اّٰللہ ﷺ‪ ،‬پبی سے میسلک‬
‫اوروانسنہ کسی تھی حٹز کے م یعلق کونی ’ہلکا لفظ‘ تھی یرداست پہیں کرسکتے۔ ہمارا حون کھو لتے لگیا ہے۔ لہذا اس ثات کا اہیمام ضروری ہے کہ ’آثار الن بویہ‘ کا ثذکرہ تمام یر حوالہ‬
‫م‬
‫خات اور کمل صحت اور پ بوت کے ساتھ کیا خاے۔‬
‫م‬
‫م‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬میں آپ کی اس ثات سے کمل انقاق کرثا ہوں اور ہم نے اس پہلو کو تحاطور یر اس کیاب میں کمل پ بوت کے ساتھ اخاگر کیا ہے۔ اس‬
‫یاب کا ثام ”اآلثار الن بویہ فی ا حزایۃ ا حزر نہ“ ہے‪ ،‬اثک یڑے سایز کے ورق (‪ )A3‬یر مربوط اثداز میں ّ‬
‫مدون کی خارہی ہے۔ اس کے د پیاجہ میں م یعدد سہرہ آقاق اور ہمہ گٹر‬
‫ل ل ح‬
‫ک‬
‫سحصیات کے مقدمات سامل ہیں۔ جن میں کحھ قاث ِل ذکر ثام یہ ہے۔‬
‫ل‬
‫مفبی موالثا ا فتح الکیانی الخشبی الہاشمی‪ ،‬مفبی المالکنہ سام‪،‬ابن موالثا مکی الکیانی شریراہ و اتحارج مسلم لیگ‪،‬بواسہ امام المحدث‪ ،‬حعقر الکیانی‪ ،‬الشید علی بن عیدالرحمن‬
‫صدر مملکت متحدہ عرب امارات ‪ ،‬شماجۃ الشتخ علی الحمعہ‪ ،‬مفبی اعظم ِمصر‪ ،‬شماجۃ الشتخ احمد الحلیلی‪ ،‬مفبی سلطی ِت عمان اور دثگر پہت سی ثام َور سحصیات‬
‫الھاشمی‪ ،‬مشٹر خاص ِ‬
‫سامل ہیں۔ عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬مٹری تخویز ہے کہ اس کیاب میں عالم اسالم کے ان مشہور علماء کا ثام تھی سامل کیا خاے چنہوں نے اب ثک ان ”آثار الن بویہ“ کی زثارت‬
‫فرمانی۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬جی ہاں‪ ،‬اگرجہ ان ثاموں کی فہرست پہت طوثل ہے مگر چید اہم ثام ضرور سامل کتے خاسکتے ہیں۔ کیاب کے دوشرے ثاب میں‬
‫رسول ثاک ﷺ کی خالیس (‪ )40‬اخاد پث کا ثذکرہ ہے۔ تیشرے ثاب میں ’عادلہ‘ کے ثارے میں تحث کی گبی ہے اور اس میں ’آثار الن بویہ‘ کے حواص کے‬
‫ِ‬
‫ل‬
‫س‬
‫م‬
‫ثارے میں ثذکرہ کیا گیا ہے اور کمل صحت کے ساتھ فرآن‪ ،‬خدپث‪ ،‬صحایہ کرام اور احماع ا م لمین کی رواثات کو پیان کیا گیا ہے۔ کیاب کا حوت ھا ثاب رسول‬
‫ن‬
‫اّٰللہ ﷺ سے وانسنہ ’آثار شرنفہ‘ سے م یعلق ہے‪ ،‬اس ثاب کو دو ذثلی حضوں میں قشیم کیا گیا ہے۔ پہلے حصے میں ’آثار شرنف‘ کو ان کی حضوصیت اور امنیاز کی‬
‫پیا یر ثاتچ حضوں میں درجہ پیدی کی گبی ہے۔‬
‫ً‬
‫ب‬
‫زمرہ ‪1‬۔ وہ آثار جن کا نعلق پبی کریم ﷺ کے ثالواسطہ ج ِسم اقدس سے ہے۔ میال مونے میارک‪ ،‬دثد ِان میارک‪ ،‬ثاجن میارک‪ ،‬عرق‪ ،‬عرق وغٹرہ‬
‫زمرہ ‪2‬۔ وہ آثار جن کا نعلق پبی کریم ﷺ ثالواسطہ ج ِسم اقدس سے ہے نعبی وہ ج ِسم اظہر کا حضہ بو پہیں تھے لیکن اس سے خڑے ہوے تھے‬
‫ً‬
‫ن ُ‬
‫ت‬
‫ق‬
‫ی‬
‫ی‬
‫م‬
‫ث‬
‫میال عمامہ شرف‪ ،‬یردہ‪ ،‬ص‪ ،‬خا م ا گو ھی‪ ،‬اِ زار وغٹرہ‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫ً ً‬
‫زمرہ ‪3‬۔ وہ آثار شرنف حو پبی کریم ﷺ کے اسیعمال میں وفیا قوفیا آنے تھے۔‬
‫ً‬
‫میال عصا‪ ،‬سبوف‪،‬محصرہ (حھونی التھی (‪Short stick-‬‬
‫‪-Mikhsarah‬‬
‫زمرہ ‪4‬۔ وہ آثار شرنف حو پبی کریم ﷺ کے ساتھ جسمانی نعلق‬
‫ً‬
‫ح‬
‫ن‬
‫م‬
‫میں رہتے مگر خداگایہ چین یت رکھتے تھے۔ میال ثٹر شرف اور وہ طوط حو آپ نے‬
‫محیلف شریراہ ِان مملکت کو اس وفت لکھے تھے۔‬

‫زمرہ ‪5‬۔ وہ آثار شرنف عمارات‪ ،‬مقامات جہاں پبی کریم ﷺ‬
‫ً‬
‫نے فیام فرماثا ثا ان کا َدورہ فرماثا اور کحھ دیر تھہرے میال صحایہ کرام کے‬
‫مکاثات۔‬
‫کیاب کے ثاب ‪ 4‬کے دوشرے حصے میں ’حصص اآلثار‘ یر‬
‫تحث کی گبی ہے۔ یہ اثک اہم حضہ ہے جس میں اس ثات کو صحت کے ساتھ‬
‫پیان کیا گیا ہے کہ ہم کس طرح اس ثات کی نصدبق کرسکتے ہیں کہ پبی کریم‬
‫ﷺ کے ساتھ وانسنہ کونی آثار اصلی ہیں ثا پہیں؟‬
‫میال کے طور یر پبی کریم ﷺ کے مونے میارک کا یہ اثک‬
‫م یقرد اور معحزانی امنیاز ہے کہ ان کے ثال وفت کے ساتھ یڑھتے رہتے ہیں‪ ،‬یہ‬
‫ضرف یہ ثلکہ ان کے سیاہ ثال سیاہ اور سفید ثال سفید رثگ ہی میں یڑھتے ہیں‬
‫اور سیاہ ثالوں کی یڑھتے کی رفیار سفید ثالوں سے زثادہ تٹز ہے۔ یہ تھی اثک خاص‬
‫امنیاز ہے کہ ضرف اور ضرف رسول اّٰللہ ﷺ کے مونے میارک وفت کے ساتھ‬
‫یڑھتے ہیں اس کے عالوہ اور کسی سحصیت‪ ،‬خلقاء راسدبن ثا دثگر صحایہ کرام‬
‫میں سے کسی کے تھی ثال وفت کے ساتھ پہیں یڑھتے‬

‫‪Okarvi.com‬‬

‫رسول ثاک ﷺ کی ذات سے میسلک مونے میارک کی صحت و صدافت کا نعین کرسکتے ہیں۔‬
‫اس پیا یر ہم‬
‫ِ‬
‫ً‬
‫اس کے ساتھ ساتھ دثگر اہم اور م یقرد حضوصیات تھی مونے میارک کا خاص امنیاز ہیں میال رسول اّٰللہ ﷺ‬
‫کے مونے میارک کا سایہ پہیں ہوثا اور یہ کہ مونے میارک آگ میں پہیں خلتے۔ ثاہم ان کی نصدبق کے‬
‫لتے خاص تحریہ اور ف‬
‫ہ‬
‫م‬
‫ث‬
‫رسول ثاک ﷺ سے میسلک کونی تھی حٹز‬
‫کہ‬
‫ے‬
‫ہ‬
‫ہ‬
‫صدف‬
‫ات‬
‫ث‬
‫ک‬
‫ا‬
‫اں‬
‫ہ‬
‫ے۔‬
‫ہ‬
‫روری‬
‫ض‬
‫م‬
‫ِ‬
‫کیھی صا نع پہیں ہوگی اس لتے کہ اّٰللہ نعالی اس کی حقاظت فرماثا ہے۔‬

‫‪Okarvi.com‬‬

‫ہ ن ً‬
‫ی‬
‫ف‬
‫پہاں میں آپ کو اثک وافعہ پیاثا ہوں‪ ،‬اہ ِل پ یت سے اثک یزرگ ستخ‪ ،‬حو اب مدپنہ م بورہ میں سکوپت ثذیر یں‪ ،‬قرپیا ‪ 8‬ماہ ل‬
‫َ‬
‫پ‬
‫پ‬
‫پہاں نشرنف الے۔ میں نے ان کے اِ کرام میں عظر حو عرق شرنفہ سے مس ہوا تھا ا ہیں دثا‪ ،‬جس کو ا ہوں نے ا پتے ثاس رکھ‬
‫ً‬
‫لیا۔ نقرپیا ‪ 10‬بوم کے نعد اثک سامی عالم تھی زثارت کے لتے نشرنف الے۔ اس یزرگ ستخ نے اس کا ثذکرہ اس سامی عالم سے‬
‫مظم پہ ت ُ‬
‫ل‬
‫م‬
‫کیا لیکن وہ عرق شرنف کے م یعلق دلی طور یر ین یں ھے۔ اسی رات ان سامی عا م نے حواب یں رسول اّٰللہ ﷺ کی‬
‫زثات کی اور حواب میں اپہوں نے رسول اّٰللہ ﷺ سے اس عرق شرنفہ کی ثاپت بوحھا بو رسول اّٰللہ ﷺ نے حواب میں فرماثا کہ ہاں‪،‬‬
‫یہ مٹرا عرق ہے اور ضرف مٹرا عرق شرنف ہی وفت کے ساتھ ثافی رہ سکیا ہے۔ یہ ت‬
‫امر حف یقت ہے کہ رسول اّٰللہ ﷺ کے‬
‫ھی‬
‫ِ‬
‫مونے میارک یہ ضرف وفت کے ساتھ یڑ ھتے ر ہتے ہیں ثلکہ ان کے ساتھ خڑی حوش بو ‪ /‬عرق ‪ 14‬سو سال سے زثادہ عرضہ گزر‬
‫خانے کے ثاوحود قایم و دایم ہے۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫اثک اور دل جسپ حف یقت ہمارے مساہدہ میں آنی کہ وفت کے ساتھ اپہوں نے پتے ثالوں کا اصافہ دثک ھا بو اس کی صدافت کے لتے اپہوں نے ان‬
‫پتے ثالوں کو ”آگ“ یر تحریہ کیا بو یہ پتے ثال اس تحریہ یر بورے ایرے۔ گوثا اس ثات کی نصدبق ہوگبی کہ یہ پتے ثال رسول اّٰللہ ﷺ کے اصل ثالوں سے‬
‫ہی اخذ ہوے ہیں۔‬
‫اثک معحزہ مونے میارک سے مساہدہ میں آثا کہ کحھ مونے میارک حب کسی محلس الذکر میں ر کھے گتے بو خرکت کرنے نظر آے اور نعض مونے میارک‬
‫اثدھٹرے میں حمکتے ہوے دک ھانی د پتے ہیں گوثا ان سے بور اخاگر ہورہا ہو۔‬
‫حصانص اآلثار کے ضمن میں اثک اور ذانی وافعہ بوں تیش آثا کہ ‪15‬ایرثل ‪2009‬ء کو میں نے حھونے سایز کا اثک پیا مونے میارک‪ ،‬تحربن کے اثک ستخ‬
‫کو تحفہ میں دثا‪ 11 ،‬حون ‪2009‬ء کو نعبی دو ماہ سے تھی کم عرضہ میں معحزایہ طور یر اس کا سایز دوگیا ہوگیا۔ میں نے ان ستخ سے اسیدعا کی کہ وہ تحربن‬
‫کے علما سے اس کی سہادت اکیھی کربں حو اپہوں نے محھے عطا کی۔‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪’ :‬آثار الن بویہ‘ کیاب کون لکھ رہا ہے اور کیا اس میں انسی دثگر کیب کا کونی حوالہ ہے حو اس موضوع یر یر عطیم ثاک و ہید (اثڈثا اور ثاکشیان)‬
‫ل‬
‫میں کھی گبی ہیں؟‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬آثار الن بویہ مٹری نصن یف ہے اور اس میں ساہ ولی اّٰللہ کے والد ِ گرامی ساہ عیدالرچیم محدث دہلوی کے کحھ حوالہ خات اس ضمن میں موحود‬
‫ہیں ثاہم محھے انسی دثگر کیب کا علم پہیں ہے۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬اس موضوع یر مٹری اپبی نصن یف ”مزارات و تٹرکات اور ان کے ف بوصات“ میں م یعدد حوالہ خات موحود ہیں‪ ،‬میں آپ کو اس کی نفصیل فراہم کردوں‬
‫گا۔ ان ساء اّٰللہ‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬میں آپ کا مم بون ہوں گا۔‬

‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬پہت سے لوگوں کے ثاس ”فرع“ نعبی مونے میارک سے نکلی ہونی ساخیں موحود ہیں‪ ،‬آپ اس کو کیسے دثکھتے ہیں؟‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬جی ہاں یہ درست ہے اور ہم نے اس کا اپبی آثکھوں سے مساہدہ کیا ہے اور انسا ثارہا مرپنہ ہوا ہے۔ (کحھ سطور فیل اس کا ذکر ہوحکا ہے کہ ثالوں میں‬
‫اصافہ دثکھا گیا ہے)‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬جن لوگوں نے آپ کو پیاثا کہ اپہوں نے رسول اّٰللہ ﷺ کو حواب میں دثکھا ہے اور آپ کو ’آثار الن بویہ‘ ہدیہ کرنے کو کہا ہے کیا آپ نے اس سلسلے‬
‫میں کونی سہادت اکیھی کی‪ ،‬اس کی نصدبق کے لتے؟‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬پہلی ثات یہ کہ ’آثار الن بویہ‘ ہمیں اثک پہیں ثلکہ م یعدد افراد سے ملے ہیں حو اثک دوشرے سے وافف تھی پہیں تھے اور محیلف مقامات سے نعلق رکھتے‬
‫تھے اور دوشری ثات یہ ہے کہ اپہوں نے یہ تمام آثار ہمیں نغٹر کسی دپیاوی ثدلے میں ہدی ًۃ تحف ًۃ عطا کتے ہیں۔ حف یقت میں یہ لوگ پہت عرضہ سے ہماری ثالش میں تھے۔‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬بو کیا آپ کو اس سلسلے میں کونی اسارہ پہیں مال تھا کہ وہ کون لوگ ہوں گے؟‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬پہیں‪ ،‬اصل میں ہمیں یہ بو اسارہ مال تھا کہ ہم یہ آثار وضول کربں گے مگر کہاں سے اور کن سے؟ اس کا علم پہیں تھا۔‬

‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬تحھلے ‪ 6 ،5‬سال کے عرضہ میں ہزاروں کی نعداد میں ان آثار الن بویہ کی زثارت سے لوگ مشرف ہورہے ہیں کیا کونی انسا وافعہ‬
‫تیش آثا کہ کسی نے اس کی نصدبق کرنے کی کونی کوشش کی؟‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬ہاں انسا ثارہا ہوا‪ ،‬حب میں سوڈان کے َدورہ یر ’آثار الن بویہ‘ کے ہمراہ گیا اس وفت سدثد گرم موشم تھا اور درجہ خرارت ‪ 48‬ڈگری‬
‫سینبی گرثڈ تھا لیکن حب ثک ’آثار الن بویہ‘ وہاں رہے اس کے دارالحالفہ کے اویر تین دن ثک ثادل حھاے رہے۔‬

‫اسی طرح کا اثک اور وافعہ سیسان (چتچنیا) کے سہر میں تھی تیش آثا حب چتچنیا کے صدر نے یرکت کے لتے ذفٹرہ شرنف کو عسل کے لتے اسیدعا‬
‫کی۔ اس وفت ان کے محل یر حو خاروں طرح سیشہ گری سے ِگھرا ہوا تھا‪ ،‬سورج بوری طرح آب و ثاب سے حمک رہا تھا اور بوں مخشوس ہوثا تھا کہ خیسے آپ محل کے‬
‫م‬
‫اثدر پہیں ثلکہ ثاہر دھوپ میں ہیں۔ لیکن خیسے ہی ہم نے عسل شرنف کے لتے ثکس سے ذفٹرہ شرنف نکاال اور اس کے لتے تمام اپ یطامات کمل کتے ہمیں‬
‫ً‬
‫نقرپیاڈیڑھ گھنیا اس عمل کو لگ گیا‪ ،‬ہم حب کہ بورے اپہماک سے عسل شرنف کے عمل میں مصروف تھے اس دوران محل کے ثاہر گارڈ نے اپبی آثکھوں سے‬
‫یہ مساہدہ کیا کہ اثک مونی پہہ کا ثادل کا ثکڑا کہیں سے آثا اور اس نے بورے محل کو ا پتے سایہ سے ڈھاپپ دثا۔ اس نے اس کو وڈبو میں من یقل کیا اور یہ وڈبو‪،‬‬
‫ُ‬
‫بوپ بوب ‪Youtube‬سوسیل می ڈثا یر موحود ہے‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫َ‬
‫روس کے دورہ میں تھی ‪ 4‬اور ‪ 5‬سیمٹر ‪2013‬ء کو اثک انسی سہادت ملی‪ ،‬حب ان کے وزیر داخلہ نے شرکاری نی وی یہ یہ سہادت دی کہ‬
‫عام خاالت میں ہم روزایہ فیل اور م یعدد خرایم کے مقدمات سے تٹرد آزما ہونے ہیں لیکن حب سے الشتخ احمد الحزرجی ا پتے تٹرکات ’آثار الن بویہ‘ کے‬
‫ساتھ ہمارے مہمان ہوے ہیں ملک تھر میں انسا کونی وافعہ ربورٹ پہیں ہوا۔‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬نعض شرنشید عیاضر ِ ’آثار الن بویہ‘ کی ساالیہ زثارت کے موفع یر ثدتنبی سے تھی آنے ہیں ثا آسکتے ہیں۔ کیا کیھی‬
‫ً ُ‬
‫انسا علم ‪ /‬مساہدہ میں ہوا کہ ان کی ثدتنبی کی وجہ سے ان سے نقنیا کحھ یرا ہوا ہوگا؟‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬ہم لوگوں کی پ یت پہیں خان سکتے لیکن انسی کونی ثات ہمارے علم میں پہیں آنی ہے کہ ’آثار الن بویہ‘ کی وجہ سے‬
‫ً‬
‫کسی کو کونی نفصان پہتحا ہو ک بوں کہ رسول اّٰللہ ﷺ پہت مہرثانی فرمانے والے ہیں۔ ہاں انسا سحص ’آثار الن بویہ‘ کے ف بوصات و یرکات سے نقنیا‬
‫ا پتے آپ کو محروم رکھیا ہے۔ حو غٹر مسلم‪ ،‬ساالیہ زثارت میں پہاں آنے ہیں محھے ان سے کونی یرنسانی پہیں ہونی۔ میں اپیا زثادہ وفت آثار الن بویہ‬
‫کی خدمت اور اصل خالت میں تحالی یرضرف کرثا ہوں اور یہ کہ میں دوشروں کو قاثل کرنے کے لتے اپیا فیمبی وفت صا نع پہیں کرثا۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫ہم خا پتے ہیں کہ پیمار ذہن اور ثدپ یت لوگ ہمیشہ ہمارے آس ثاس ہونے ہیں۔ آج اگر حصرت ابوثکر صدبق رضی اّٰللہ غنہ تھی ان کو ان ’آثار الن بویہ‘ کی‬
‫سہادت دبں بو تھی یہ پیمار ذہن کے لوگ نقین پہیں التیں گے۔ اب ثک ہم نے غٹر مسلموں کو ’آثار الن بویہ‘ کی عام زثارت کی اخازت پہیں دی ہے لیکن‬
‫محھے نقین ہے کہ اگر کیھی انسا ہوا بو یہ اگر نعصب کی عنیک کے نغٹر ان کی زثارت کربں بو عین ممکن ہے کہ اسالم ف بول کرلیں گے۔‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬آپ ثالکل صحتح فرمارہے ہیں۔‬

‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬رسول اّٰللہ ﷺ کے مونے میارک کے م یعلق کحھ اور مساہدات و معحزات آپ کے سا متے تیش کرثا ہوں۔ آپ ﷺ کے سیاہ‬
‫ثال سیاہ ہی یڑ ھتے ہیں اور سفید ثال سفیدی میں یڑ ھتے ہیں اور چیا میں ر ثگے ثال ِچیا ہی میں یڑ ھتے ہیں۔ سیا ہ ثال سفید ثالوں سے زثادہ تٹزی سے یڑ ھتے ہیں‪،‬‬
‫سیاہ ثال عمومی طور یر ‪ 20‬سے ‪ 30‬سالوں میں دوگیا ہوخانے ہیں حب کہ سفید ثالوں کو ‪ 70‬سے ‪ 80‬سال لگ خانے ہیں۔ سیاہ ثالوں کو ’حمال‘ کہا خاثا‬
‫ہے حب کہ سفید ثال میارک کو ’خالل‘ کہا خاثا ہے۔‬
‫کیاب کے اگلے ثاب میں ’ذکر‘ کا پیان ہے۔ رسول اّٰللہ ﷺ کے مونے میارک خرکت کرنے ہیں اور ان سے بور تھوپیا ہے حب ان کے سا متے‬
‫’ال الہ اال اّٰللہ‘ یڑھا خاثا ہے۔ ملک لنیان سے نعلق رکھتے والے اثک سحص کے ثاس اس کا نضویری رکارڈ موحود ہے۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫کیاب کے اگلے ثاب میں ان چید معحزانی وافعات کا ثذکرہ ہے حو ان مونے‬
‫میارک رسول اّٰللہ ﷺ سے میسلک ہیں۔ اس سلسلے میں پہال وافعہ ابوظہبی کے‬
‫چ یف اور مشہور عالم کے م یعلق ہے۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫ُ‬
‫وہ اثک ہسنیال میں زیر عالج تھے اور کسی وجہ سے ان کے ثدن سے حون پہیں رک رہا ت ھا۔ ڈاکٹروں کی تمام کوشسیں نے سود‬
‫رہی تھیں‪ ،‬خکومت متحدہ عرب امارات نے ان کو بورپ من یقل کرنے کے لتے ہوانی جہاز کا پیدونست کردثا ت ھا‪ ،‬حب میں ان کے کمرے میں داخل‬
‫ہوا بو ستخ صاحب ا پتے تخوں کو وصیت فرمارہے تھے۔ میں یہ دثکھ کر پہت عم گین ہوگیا ک بوں کہ وہ مٹرے والد ِ گرامی کے دوست تھے اور مٹرے‬
‫ً‬
‫لتے یہ پہت مشکل ت ھا کہ میں ان کو کھودوں‪ ،‬میں قورا گھر آثا اور مونے میارک ساتھ لے کر ان کے ثاس دوثارہ پہتحا۔ خیسے ہی اپہوں نے محھے دثک ھا‬
‫بو فرماثا‪ ،‬مٹرے تنتے‪ ،‬اح ھا ہوا یم آ گتے‪ ،‬مٹرے لتے دعا کرو۔ میں نے حواب دثا کہ میں آپ کے لتے سقا الثا ہوں اور یہ کہتے ہونے میں نے مونے‬
‫میارک ان کے حوالے کردثا۔ اگلے ہی لمچے میں نے دثک ھا کہ ستخ صاحب مونے میارک سے اس طرح ثاتیں کرثا شروع ہو گتے گوثا وہ پبی کریم ﷺ کے‬
‫ً‬
‫دوست ہوں۔ وہ فرپیا ‪ 20‬میٹ ثک ان مونے میارک سے مسلسل ثاتیں کرنے رہے پہاں ثک کہ ان کے ثدن سے حون پہیا پید ہوگیا۔ محھے اس‬
‫ثات کا قلق ہے کہ اس وفت مٹرے ثاس کونی پ یپ رکارڈر پہیں ت ھا کہ میں ان کی گفیگو کو‪ ،‬حو اپہوں نے مونے میارک (ﷺ) سے کی تھی‪ ،‬محفوظ‬
‫ً‬
‫کرلنیا۔ میڈنکل اسیاف ‪ /‬معالج حصرات حٹران تھے کہ حون پہتے کی کیا وجہ تھی اور کیسے یہ چیم ہوگبی۔ وہ چ یف اس کے نعد نقرپیا اثک مہنیا مزثد زثدہ‬
‫رہے اور محیلف مقامات یر آنے خانے رہے۔‬

‫‪Okarvi.com‬‬

‫م‬
‫اثک اور عحزانی وافعہ مل ِک لنیان کے اثک سحص کے سا متے تیش آثا۔ وہ سحص مٹرے ساتھ اس کیاب ’آثار الن بویہ‘ کی ثدوبن کے سلسلے میں‬
‫کام کررہا ت ھا اور ’آثار الن بویہ‘ کے نضویری نقش کو کیاب میں من یقل کرثا ت ھا کہ اثک دن اسے گھر سے قون کال آنی کہ اس کی ماں سدثد پیماری میں‬
‫’کوما‘ میں خلی گبی ہے اور اس کی خالت حظرے میں ہے۔ اس سحص نے محھ سے اپبی والدہ کے لتے ’مثٹرک ثانی‘ حو مونے میارک کے عسل میں‬
‫اسیعمال ہوا ا پتے ساتھ لیا اور ا پتے ملک اپبی والدہ کے ثاس لے گیا۔ وہ اسے اپبی والدہ کو ثالثا خاہیا ت ھا لیکن معالج حصرات اس ڈر سے اخازت یہ‬
‫د پتے کہ کہیں ثانی ان کے تھے تھڑوں میں یہ خال خاے۔ ثاہم اس سحص نے جسک کٹڑے کو اِ س ثانی میں ڈبوکر اپبی ماں کے جہرے اور ح ھانی یر‬
‫لگاثا خیسے ہی ثانی سے یر کٹڑا ان کے دل یر لگاثا گیا بو میڈنکل ہارٹ ماتثٹر حو اس کی مال کی دل کی دھڑکن بوٹ کرنے کے لتے لگاثا گیا ت ھا اس یر‬
‫ً‬
‫دل کی اویر پتچے کی دھڑکن کی تحاے لفظ اّٰللہ اّٰللہ کی سکل میں لفظ نظر آنے لگے۔ یہ اثک حٹران کن ثات تھی اور یہ ثات نقنیا ہسنیال کے عملہ کے‬
‫لتے (حو کہ عیسانی ت ھا) اور تھی حٹران کن تھی۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫چیاں جہ ہسنیال کا تمام عملہ ہارٹ ماتثٹر کے گرد حمع ہوگیا اور اپہوں نے ہارٹ ماتثٹر کا نعور معاپنہ شروع کردثا۔ اپہوں نے اسے م یعدد ثار سوتچ‬
‫آف اور سوتچ آن تھی کیا ثاکہ اگر کونی یروگرام میں کونی خرانی ہے بو تھیک ہوخاے لیکن حوں ہی ماتثٹر کو آن کیا خاثا ت ھا اس یر لفظ اّٰللہ اّٰللہ کی‬
‫ضورت میں دل کی دھڑکن کا ڈ پیا نظر آنے لگیا۔ اس ضورت خال میں اپہوں نے ہارٹ ماتثٹر کو چیک کرنے کے لتے کسی کمنبی کے الیکٹرنکل‬
‫پیکییشن کو ُثالثا‪ ،‬جس نے اگلے دن آنے کے لتے وفت طے کرلیا۔‬
‫اگلے دن پیکییشن نے ہارٹ ماتثٹر کو ہر ہر نقے سے چیک کیا مگر نے سود۔ اس نے تھر پیا ہارٹ ماتثٹر لگاثا لیکن پیا ماتثٹر تھی اسی‬
‫طرح لفظ اّٰللہ اّٰللہ دک ھانے لگا‪ ،‬تین دن ثک اس م یظر کو سیکڑوں لوگوں نے اس ہسنیال میں موحود اور ثاہر کے لوگوں نے اپبی آثکھوں سے دثک ھا۔ چبی‬
‫کہ اس سحص کی والدہ اس ِدار قانی سے کوچ کرگییں۔ ہمارے ثاس اس ماتثٹر کی نصاویر محفوظ ہیں۔‬
‫اس وافعہ سے متحرسح ہے کہ غٹر مسلم لوگ خیسے کہ اس مشتحی ہسنیال کے لوگ تھے‪ ،‬ا نسے معحزات یر نقین کرلنتے ہیں لیکن‬
‫پیمار ذہن کے لوگوں کے دلوں یر مہر لگ خکی ہونی ہے اور وہ نقین کرنے میں نس و تیش سے کام لنتے ہیں۔‬
‫االمام الخو پبی حوکہ خامعہ االزہر‪ ،‬مصر کے ثلید ثایہ اساثذہ ہیں شمار ہونے ہیں۔ اپہوں اپبی کیاب الفیاوی (حوکہ خار خلدوں یر مشیمل‬
‫لس‬
‫ہے) میں ا نسے لوگوں کا شمار ”اعداء اّٰللہ ورسولہ وا م لمین“ نعبی وہ اّٰللہ اور اس کے رسول ﷺ اور مسلمابوں کے دشمن کے طور یر کیا ہے ک بوں‬
‫کہ ا نسے پیمار ذہن کے لوگ اّٰللہ اور اس کے رسول ﷺ کی صقات و کماالت کو محدود نظر سے دثکھتے ہیں۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫”آثار الن بویہ“ کیاب کے اگلے ثاب میں میدرجہ ذثل پہلوؤں کا ذکر کیا گیا‬
‫ہے۔‬
‫ہم آثار الن بویہ کو کیسے‪ ،‬کہاں اور کس اثداز سے رکھتے ہیں؟‬
‫آثار الن بویہ کو رکھتے کے آداب کیا ہیں؟‬

‫آثار الن بویہ کی صقانی‪ ،‬حقاظت اور صحت کے لتے کون سے‬
‫آالت اسیعمال میں الے خانے ہیں؟‬

‫مونے میارک کو کس اثداز سے لگاثا خاثا ہے ثاکہ اس کے‬
‫یڑ ھتے کا عمل خاری رہے؟‬
‫مونے میارک کے سیدھا اور الیا لگے ہونے کا فرق کیسے خاتحا‬
‫خاثا ہے؟‬
‫مونے میارک کے لتے ’وثکس‘ (موم) کیسے پیانی خانی ہے؟‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫اس ثاب میں ہر اثک پہلو کو پہت نفصیل اور محیاط اثداز سے پیان کیا گیا ہے ثاکہ قاری اس تمام عمل‬
‫سے آ گاہی خاصل کرسکے‪ ،‬جہاں ضروری ہوا وہاں نصاویر کا حوالہ تھی دثا گیا ہے۔‬
‫میال کے طور یر حب ہم سیاہ رثگ کے مونے میارک کو محفوظ کررہے ہونے ہیں ثا اس کی‬
‫صقانی کررہے ہونے ہیں بو ہم سفید رثگ کا کٹڑا اسیعمال کرنے ہیں حب کہ سفید رثگ کے مونے میارک‬
‫کے لتے سیاہ رثگ کے کٹڑے کا اسیعمال کرنے ہیں۔ اسی طرح مونے میارک کی شمت کا نعین پہت‬
‫ضروری ہے ک بوں کہ مونے میارک ضرف اسی ضورت یڑ ھتے ہیں اگر ان کو ان کی صحتح شمت میں لگاثا خاے۔‬
‫مونے میارک کی شمت کو خاتحتے کے لتے ہم مونے میارک کو انگلی کے بوروں یر ز پ بون کا پیل لگاکر اس کی‬
‫مالتمت کا اثدازہ کرنے ہیں اگر یہ مالتمت پتچے سے اویر کی خاپب ہو بو یہ صحتح شمت ہے اور اسی ضورت میں‬
‫ثال یڑ ھتے کا عمل خاری رہے گا۔‬

‫‪Okarvi.com‬‬

‫دوشری اہم حٹز مونے میارک کے یڑ ھتے کے لتے حضوضی طور یر پیار کی خانے والی ’وثکس‘ (موم) ہے۔ جہاں اس مونے‬
‫میارک کو اس کی صحتح شمت میں لگاثا خاثا ہے۔‬
‫میدرجہ ثاال نفصیل پیان کرنے کا مفصد یہ ہے کہ وہ تمام حوش تحت افراد جن کے ثاس ’آثار الن بویہ‘ کسی طور یر محفوظ ہیں ان‬
‫ن‬
‫کی علیم و آ گاہی ہوسکے۔ رواپت میں آثا ہے کہ رسول اّٰللہ ﷺ نے ’صلح خدتینہ اور ججۃ الوداع کے موفع یر کم و تیش ‪ 28,000‬صحایہ کرام کو‬
‫محیلف ’آثار‘ مرحمت فرماے تھے‪ ،‬ان میں تیش یر نعداد ان صحایہ کرام کی تھی جن کے ثاس ’مونے میارک‘ تھے۔ لہذا ا نسے ک بوں کر ہوسکیا‬
‫ہے کہ رسول اّٰللہ ﷺ کے ثال میارک ثاپید ہوخاتیں حب کہ یہ وفت کے ساتھ یڑ ھتے تھی ہوں اور ان کو آگ تھی یہ خالسکبی ہو۔‬

‫‪Okarvi.com‬‬

‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬صحتح رواثات میں ہے کہ چید اصحاب نے یرکت کے لتے مونے میارک اپبی فٹر میں ا پتے ساتھ‬
‫ر کھے تھے۔ میں خاپیا خاہیا ہوں کہ ثاکشیان میں جن لوگوں کے ثاس مونے میارک ہیں وہ ان کو غثٹر کے ساتھ ثا صیدل کے یرادہ‬
‫میں رکھتے ہیں‪ ،‬آپ کے چیال میں کیا یہ صحتح ہے؟ مٹرا اثک اور سوال ہے کہ اسین بول کے ثاپ کانی م بوزیم میں حو مونے میارک‬
‫زثارت کے لتے ر کھے گتے ہیں وہ وفت کے ساتھ ک بوں پہیں یڑ ھتے؟‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫ً‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬جن لوگوں نے یہ آثار شرنف ا پتے ساتھ فٹر میں ر کھے ہیں اپہوں نے نقنیا ا پتے ساتھ چ یت کی ضماپت رکھ لی ہے خیسا کہ نعض‬
‫صحایہ کرام اور ثانعین کے ذکر میں آثا ہے لیکن اس سے پہت سے آنے والی نسلوں کے لوگ ان کی زثارت سے محروم ہو گتے۔ آپ کے دوشرے‬
‫سوال کے حواب میں عرض ہے کہ مٹری تحف بق کے مطابق یہ ثال میارک مصبوعی وثکس (‪ )Synthetic wax‬میں ر کھے ہوے ہیں اور ان‬
‫سے تیش یر کی شمت صحتح پہیں لگانی گبی ہے خالنہ دبوں میں ثاپ کانی ادارہ کے لوگوں نے محھ سے اس سلسلے میں رانطہ کیا ہے اور میں‬
‫ع یقرپب وہاں خانے کا ارادہ رکھیا ہوں اور اس سلسلے میں ان کو تمام ضروری معلومات تھی فراہم کروں گا۔‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬کیا آپ یہ یرپ یت ا پتے تخوں کو تھی دے رہے ہیں؟‬
‫َ‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬جی ہاں میں ا پتے تخوں کو ثاقاعدہ سک ھارہا ہوں اور یہ پہت ضروری امر ہے۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬آپ رہ تمانی فرماتیں کہ ہم کس طرح سے خاتچیں گے کہ کونی ’مونے میارک‘ اصلی ہے ثا پہیں؟ کحھ لوگ‬
‫اس کو ثانی میں رکھ کر خاتحتے ہیں اور اس یر ثارچ کی روسبی سے معلوم کرنے ہیں کہ ’سایہ‘ ہے ثا پہیں اگر سایہ یہ ہو بو یہ اصلی ہوگا؟ آپ‬
‫اس سلسلے میں کیا کہتے ہیں؟‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬مٹری راے میں یہ طرنفہ موزوں پہیں ہے‪ ،‬اس طر نقے سے خاتحتے میں یہ ساپنہ ہوسکیا ہے کہ مونے میارک بو‬
‫اصلی ہو‪ ،‬لیکن ’سایہ‘ کی وجہ ’ثانی کا سایہ‘ ثا تخور (حوش بو)‪ ،‬عظر کا سایہ بن رہا ہو حو اس مونے میارک کو لگی ہو‪ ،‬ثا صقانی ا حھے طر نقے سے یہ‬
‫ہو؟ ثا یہ کہ مٹرے ہاتھ ا حھے طر نقے سے صاف یہ ہوں اور ان کی وجہ سے ’مونے میارک‘ یر کحھ لگا ہو۔ گوثا حب ثک مونے میارک پہت‬
‫ف‬
‫ا حھے اثداز سے صاف یہ ہو‪ ،‬اس تحریہ سے علط ہمی ہوسکبی ہے۔ مٹری تحف بق کے مطابق ’مونے میارک‘ کو خاتحتے کے لتے اسے تین مراخل‬
‫سے گزارثا خا ہنتے۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫مرخلہ تمٹر ‪:1‬۔ ” سایہ یہ ہوثا“ اس تیسٹ کے لتے مونے میارک کو پہلے ’زم زم‘ کے ثانی کے ساتھ پتچے سے اویر کی طرف صاف کرثا خا ہنتے‪ ،‬تھر اسے عام صاف‬
‫ً‬
‫س‬
‫ی‬
‫ی‬
‫ہ‬
‫ہ‬
‫ثانی سے دھوثا خا ہنتے ک بو ں کہ زم زم ثانی میں پہت سے تمکیات میال سوڈ م‪ ،‬بوثا م وغٹرہ ہونے یں حوکہ مونے میارک یر رہ خانے یں اگر اسے عام صاف ثانی سے‬
‫یہ دھوثا خاے ‪ -‬اس کے نعد مونے میارک کو یرم و مالیم کٹڑے سے صاف کرثا خا ہنتے اگر کونی مونے میارک ”سایہ یہ ہوثا“ کا تیسٹ واصح یہ کرسکے بو اسے دوشرے‬
‫مرخلے یر گزارثا خا ہتے ک بوں کہ ہوسکیا ہے کہ ’سایہ‘ ہونے کی وجہ ہمارے ہاتھوں کا پہت زثادہ صاف یہ ہوثا ہو۔‬
‫مرخلہ تمٹر ‪:2‬۔ ”مونے میارک کا ذکر کے ساتھ خرکت کرثا“ مونے میارک کے سا متے ذکر کیا خاے۔ اگر یہ اصل مونے میارک ہوگا بو ان ساء اّٰللہ‬
‫یہ ذکر کے ساتھ خرکت کرے گا‪ ،‬لیکن اگر انسا یہ ہو بو اسے تیشرے مرخلے سے گزارا خاے۔‬
‫مرخلہ تمٹر ‪:3‬۔ ”مونے میارک کو آگ پہیں خالنی“ اگر پہلے دوبوں مرخلوں میں مونے میارک‪ ،‬کے اصل ہونے کی نصدبق یہ ہورہی ہو بو اسے آگ‬
‫میں خالنے کا تیسٹ کیا خاے۔ یہ تیسٹ اس کے اصل ثا نقل میں صاف فرق پیادے گا۔‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬آپ کس طرح یہ ہمت کرسکیں گے کہ مونے میارک کو مرخلہ تمٹر ‪ 3‬تیسٹ سے گزارا خاے۔ مٹرا مطلب کہ ہمارا دل اور روح‬
‫حوف سے کاپپ ا تھے گی اگر اسے اس تیسٹ سے گزارے خانے کا چیال آے؟‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫ً‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬آپ نقنیا درست فرمارہے ہیں لیکن میں آپ کو پیاثا ہوں کہ یرکنہ خالفت عیماپنہ زرکلی نے مونے میارک کو ثگھلتے ہوے کرسیل میں‬
‫محفوظ کیا‪ ،‬یہ اثک حضوضی ڈیزابن کا خامل کرسیل ہے جس میں مونے میارک کو ہمیشہ کے لتے محفوظ و مامون پیانے اور اسی کا حضہ پیانے کے لتے ثگھالثا گیا ہے۔‬
‫اسے ‪ 800‬ڈگری سینبی گرثڈ ثک ثگھالثا گیا لیکن اس قدر خدت والے یم یرے خر (درجہ خرارت) میں تھی مونے میارک اپبی اصل خالت میں محفوظ رہا اور آج ثک ہے۔‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬ماساء اّٰللہ‪ ،‬آپ اس موضوع یر اثک انساپ یکلو نی ڈثا ہیں۔ ثا ستخ! حب سے آپ کے ثاس یہ ’آثار الن بویہ‘ موحود ہیں کیا آپ کو رسول اّٰللہ‬
‫ﷺ کی حواب میں زثارت نصیب ہونی ہے؟‬

‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬جی ہاں‪ ،‬الحمد ّٰللہ محھے رسول اّٰللہ ﷺ کی حواب میں ثاتچ سے زثادہ مرپنہ زثارت ہونی ہے۔‬

‫اثک مرپنہ رسول اّٰللہ ﷺ اس کمرے کے سا متے فیام فرما تھے جہاں یر ہم نے یہ آثار الن بویہ ر کھے ہوے ہیں۔ آپ ﷺ فیلہ شرنف کی طرف دثکھ رہے‬
‫ً‬
‫تھے اور ان کے پتحھے اثک پہت یڑا مٹز تھا جس کے اویر سفید رثگ کا کٹڑا یڑا ہوا تھا۔ یہ مٹز نقرپیا ‪ 3‬گز حوڑانی میں تھا اور ثاخد ِ نظر لمیانی میں تھیال ہوا تھا پہاں ثک کہ مٹز‬
‫کا دوشرا کیارا دکھانی یہ د پیا تھا۔ اس مٹز کے شروع میں وہ تمام آثار الن بویہ موحود تھے حو ہمارے ثاس محفوظ ہیں۔ یہ ’آثار‘ نغٹر کسی عالف کے موحود تھے گوثا صاف نظر‬
‫آرہے تھے‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫ان آثار کے ساتھ ہزاروں اور الکھوں کی نعداد میں کیب موحود تھیں۔ پبی کریم ﷺ نے ا پتے ہاتھ میارک ثلید کرکے ارساد فرماثا‪ :‬ھذہ‬
‫آثاری۔ نعبی یہ مٹرے آثار ہیں۔ اور انسا کرنے ہوے اپہوں نے حب آثار کی طرف اسارہ کیا بو روسبی کا اثک بور ان آ ثار سے تھو پتے لگا گوثا بوں لگ رہا تھا‬
‫خیسے ہر اثک آثار شرنف اثک خگ مگاثا ہوا سیارا ہو۔‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬آپ اپبی زثدگی میں کیا پیدثلی مخشوس کرنے ہیں؟ حب سے آپ ان ’آثار الن بویہ‘ کے اماپت دار و ثگہ ثان ہوے ہیں؟‬

‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬پہت سی! پہلی پیدثلی یہ ہونی کہ متحدہ عرب امارات اہ ِل انصار قنیلہ نے محھے ’یرنس آف انصار‘ منتحب کرلیا ہے۔ اس‬
‫م یصب کے لتے دپیا تھر سے ’‪ ‘8‬موزوں امیدوار تھے‪ ،‬وہ تمام محھ سے زثادہ یڑھے لکھے تھے اور تیش یر محھ سے زثادہ ثاایر اور امٹر تھے۔ ہم انصار قنیلہ کی‬
‫خدمت ا پتے والد کے زمانے سے کررہے ہیں۔ اس کے عالوہ محھے انصار یرادری کا شردار منتحب کیا ہوا ہے۔‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬آپ ا پتے اثدر کیا پیدثلی مخشوس کررہے ہیں۔ مٹرا مطلب ہے کہ روخانی طور یر آپ کے مخشوسات کیا ہیں؟ آپ نے کون‬
‫کون سی عادات میں واصح پیدثلی ثانی ہے؟ حوں کہ مٹرا نقین ہے کہ یہ ’عطا‘ عام پہیں ثلکہ خاص الحاص ہے۔ مٹرے یزدثک آپ اس دپیا کے سب سے‬
‫امٹر اور ممیاز سحص ہیں؟‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬الحمد ّٰللہ‪ ،‬روخا ی طور یر میں ے پہت سی پیدثلیاں مخشوس کی ہیں‪ ،‬میں اسے ظاہر ہیں کر ا خاہیا۔ آثار ال بویہ کے سلسلے میں آپ کو پیاثا‬
‫خلوں کہ حوں کہ ہمارے ثاس اثک کثٹر نعداد میں آثار شرنف موحود ہیں۔ ا میں دو عدد ذفٹرہ شرنف ہیں۔ لہذا ہم ا کی خاص طور یر حقاظت و یزنی میں کسی قسم کی کونی کشر‬
‫ُ‬
‫س‬
‫م‬
‫ح‬
‫ک‬
‫ف‬
‫ف‬
‫ث‬
‫ہیں اتھا رکھتے۔ ہم ا آثار کو کیھی نغٹر عالف کے ثا نغٹر سیسے کے ہیں رکھتے ثاکہ کونی ا کو ھو ہ کے اور سی طرح ا کو کونی صا ہ یہ چے۔ یں آپ کو ا ک وا عہ پیاثا ہوں کہ‬
‫ج بوا میں مٹرے اثک دوست کے ثاس اثک مونے میارک تھا۔ لیلۃ القدر میں اس کے دوست و اچیاب ے اضرار کیا کہ وہ یر کت کے لتے اس مونے میارک کی ا کو زثارت‬
‫کرواے۔ مٹرے وہ دو َست گھر سے مونے میارک لے آے اور زثارت کے لتے رکھ دثا۔ یہ مونے میارک نغٹر کسی ب د سیسے میں موحود تھا ثاکہ لوگ ہ ضرف اس کی زثارت‬
‫ً ً‬
‫کرسکیں ثلکہ اس میں نسی ہونی حوش بو کی مہک لے سکیں۔ یہ زثارت فردا فردا ثکے نعد دوشرے خاری رہی پہاں ثک کہ آخری فرد زثارت کے لتے آے اور ا ہوں ے اسے‬
‫دثکھتے ہی اتھاکر اپ ے ا در گل لیا۔‬
‫ُ‬
‫ک‬
‫اس وافعہ سے ہمیں سبق مال‪ ،‬اب ہم کسی تھی آثار کو اس طرح کھال ہیں ر ھتے۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫ہمارے ثاس دو طرح کے کرسیل کے خار ہیں۔ کحھ مونے میارک محدب عدسہ (میگ نی قابن گالس) کی مدد سے زثارت کے لتے ر کھے گتے ہیں‪،‬‬
‫ً‬
‫دوشرے اثک خاص ڈیزابن سدہ خار میں ر کھے گتے ہیں اور اس میں اثک سوراخ رکھا گیا ہے ثاکہ مونے میارک سے مہک میارک ثاہر ثک آسکے۔ یہ خار نقرپیا ‪ 2‬کلو گرام‬
‫’خاثدی‘ کی دھات سے پیار کیا گیا ہے اور اسے اثک خگہ سے دوشری خگہ ثآسانی من یقل کیا خاسکیا ہے اگر خداتخواسنہ علطی سے پتچے تھی گر خاے بو مونے میارک کو‬
‫کسی قسم کی گزثد یہ پہتچ سکے۔‬

‫کیاب کے اگلے ثاب میں اس وثکس (موم) کو پیار کرنے کا طرنفہ پیاثا گیاہے حو مونے میارک کے یڑھتے کے عمل میں سازگار ہوثا ہے۔ یہ وثکس‬
‫مصبوعی اور انسا عام پہیں ہے حو ہم ُسٹر مارکیٹ سے خرثدنے ہیں۔ یہ وثکس قدرنی طور یر سہد کے حھتے سے خاصل کی خانی ہے حو قدرنی صحراؤں میں ثانی خانی ہے۔‬
‫اس وثکس کو پہاپت محیاط اثداز سے سہد کے حھتے سے الگ کیا خاثا ہے اور تھر اسے گرم ثانی میں رکھا خاثا ہے اور تھر پیلے غثٹر (‪ )Blue Amber‬میں ڈاال خاثا‬
‫ہے۔ پیال غثٹر اثک ثاثاب سے ہے حو خالص سونے سے تھی مہ یگا ہے۔ اس میں ’کسبوری‘ ( ‪ )Musk‬ڈالی خانی ہے اور تھر اسے آہسنہ آہسنہ مرکب میں پیدثل کیا‬
‫خاثا ہے۔ اس مرکب میں اثک پہت ہی ثاثاب گالنی رثگ کا کاقور (‪)Pink Camphor‬ثا پیلے رثگ کا کاقور (‪ )Yellow Camphor‬ڈاال خاثا ہے لیکن‬
‫سفید رثگ (‪)White Camphor‬کا ہر گز پہیں۔ اس کے نعد اس مرکب کو ثکڑوں میں کاٹ کر اس کے اثدر کاقور ثاؤڈر‪ ،‬پیھر کے نغٹر ڈال کر مالثا خاثا ہے‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫اور ت ھر دوثارہ غثٹر ڈاال خاثا ہے۔ یہ خاص وثکس قدرنی طور یر لگتے والی اسیاء کی مدد سے پیار ہونی ہے اور یہ وثکس ‪ 11‬سے ‪14‬سال ثک ثاپیدار رہبی ہے۔ پہاں میں اثک‬
‫خاص ثات کہیا خاہیا ہوں کہ مونے میارک یر کونی تھی حوش بو پہیں لگانی خانی۔ یہ رسول اّٰللہ ﷺ کے معحزوں میں سے اثک معحزہ ہے کہ مونے میارک میں سے قدرنی طور یر‬
‫اثک ثاثاب اور مسخور کن حوش بو ‪ 1,400‬سال سے زاثد عرضہ گزرنے کے ثاوحود آج ثک آرہی ہے۔ خیسا کہ ہم خا پتے ہیں کہ مالثکہ مونے میارک کی زثارت کے لتے موحود‬
‫رہتے ہیں‪ ،‬بو حو حوش بو ہم پیانے ہیں وہ مونے میارک کے ارد گرد کے ماحول نعبی ثکس اور عالف ثا وثکس جہاں یہ مونے میارک لگاے خانے ہیں‪ ،‬وہاں یر لگانے کے لتے‬
‫ہے۔‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬ماساء اّٰللہ پہت عمدہ اور احھا چیال ہے۔ ثاستخ! کیا آپ کا خاثدان شروع سے پہاں فیام ثذیر ہے ثا آپ کسی اور عالقے ثا ملک سے پہاں‬
‫ہحرت کرکے آے تھے؟‬

‫دور خالفت میں مدپنہ م بورہ سے ہحرت کرکے متحدہ عرب امارات کی رثاست فحٹرہ میں سکوپت‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬ہمارا خاثدان سیدثا ابوثکر صدبق رضی اّٰللہ غنہ کے ِ‬
‫اخنیار کرگیا تھا۔ یہ خروب ال ِردا )‪ (Haroob Al Rida‬کے وفت کی ثات ہے۔ فحٹرہ کے عالقے دثاال پ یعہ )‪ (Dibba Al Bay'ah‬اس وفت خالت ِ چیگ میں‬
‫دور خالفت میں حصرت عکرمہ بن ابوسفیان رضی اّٰللہ غنہ کی سنہ ساالری میں کقار سے چیگ کے لتے پہاں لس ِکر اسالم کے‬
‫تھے۔ حصرت ابوثکر صدبق رضی اّٰللہ غنہ نے ا پتے ِ‬
‫د ستے تھتچے‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫۔ ہمارے خاثدان کے ‪ 14‬افراد اس لسکر ِ اسالم میں سامل تھے (چیگ ِ ال ردا کے ثام سے یہ‬
‫لسکر اسالم کقار سے لڑا)۔ ان ‪ 14‬افراد میں سے اثک مٹرے خ ِد امحد العین کے عالقے میں اس‬
‫وفت ثک تھہرے رہے ثاکہ اس ثات کا نقین اور اطمنیان خاصل ہوخاے کہ چیگ ال ردا کا مشن‬
‫کام ثاب رہا اور عالفہ کا ہر سحص مسلمان ہوحکا ہے۔ اس کے نعد ہمارا خاثدان دوثارہ مدپنہ م بورہ خال‬
‫دور خالفت میں ان کی درحواست یر ہمارا خاثدان عراق ہحرت کرگیا۔‬
‫گیا۔ تھر خل یفہ ہارون الرسید کے ِ‬
‫خل یفہ مامون الرسید کے عہد ِ خالفت ثک وہیں فیام ثذیر رہا۔ اس کے نعد ہم دوثارہ متحدہ عرب امارات‬
‫میں وانس ہحرت کرکے آ گتے۔‬
‫۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫ً‬
‫س‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬کیا آپ کے خاثدان کا نعلق کسی روخانی سلسلے سے ہے میال قادری‪ ،‬ساذلی‪ ،‬رقاعی ثا کونی اور ضوفی لسلہ؟‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬جی ہاں ہم قادری‪ ،‬ساذلی ضوفی سلسلے سے ہیں عالوہ اس کے ہمارا اثک اپیا تھی روخانی سلسلہ ہے۔ میں آپ کو‬
‫َ‬
‫ش‬
‫ہ‬
‫م‬
‫م‬
‫م‬
‫پ‬
‫اثک وافعہ پیاثا ہوں۔ اثک روز تم ِاز فحر کے نعد دپبی کی مسحد میں‪ ،‬یں اوراد یڑ ھتے یں م عول تھا حوکہ ہت درکار وفت یں یڑھے خانے یں‪،‬‬
‫ً‬
‫خ‬
‫م‬
‫م‬
‫ث‬
‫ث‬
‫م‬
‫گ‬
‫اس دوران مسحد میں موحود فرپیا دو سو کے فرپب لوگ آہسنہ آہسنہ سحد سے لے تے پہاں ک کہ ا ک آدمی حو سحد یں ثافی رہ گیا وہ‬
‫مٹرے پتحھے کھڑا ہوگیا‪ ،‬اور حب میں اوراد یڑھ کر قارغ ہوا بو اس نے بوحھا کہ کیا آپ الشتخ احمد الحزرجی (حوکہ مٹرے خد امحد تھے) کے رسنہ‬
‫دار ہیں؟ اس نے کہا کہ میں نے آپ کو اس طرح پہحاثا کہ آپ تھی اپہی اوراد کا ذکر کررہے تھے حو اپہوں نے اپیا وط یفہ پیا رکھا تھا‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫پہرخال کیاب کے اگلے ثاب میں ان تمام ”آثار الن بویہ“ کی نفصیل درج کی گبی ہے حو ہمارے ثاس محفوظ ہیں۔ اثک قاثل ذکر ثات یہ ہے کہ ہمارے ضرف‬
‫وہ ’آثار الن بویہ‘ ہیں جن کے موحودہ ثگہ ثان و ثگران ہم ہیں۔ نعبی ہم دوشروں کے آثار اماپت کے طور یر ا پتے ثاس پہیں رکھتے‪ ،‬ان آثار الن بویہ میں سے چید اثک کی نفصیل یہ‬
‫ہے‪:‬۔‬
‫ذفٹرہ شرنف‪ 2 :‬عدد‪ ،‬ان میں اثک حو صلح خدتینہ کے موفع یر عطا ہوا۔ اس کی موحودہ لمیانی (یڑھتے کے نعد) ‪ 103‬سینبی مثٹر ہے حب کہ دوشرا حو کہ ججۃ‬
‫‪1‬‬‫الوداع کے موفعہ یر مرحمت ہوا اس کی لمیانی اس وفت ‪ 15‬سینبی مثٹر ہے۔‬

‫‪2-‬‬

‫‪3-‬‬

‫‪5-‬‬

‫جسلہ شرنف‪ 2 :‬عدد‬

‫شر اقدس سے پہیں لتے گتے نعبی داڑھی‬
‫المحامہ (ثال میارک حو رسول اّٰللہ ﷺ کے ج ِسم اقدس کے محیلف حضوں سے ہیں۔ المحامہ ان ثال میارک کو کہتے ہیں حو ِ‬
‫میارک کے ثال (ہم ا پتے تحرنے کی پیا یر دو محیلف ثالوں کو ثآسانی علتحدہ کرسکتے ہیں حو شر میارک ثا داڑھی میارک سے ہوں)‬
‫بوسنہ‪ :‬وہ ثال میارک حو حصرت خالد بن ولید رضی اّٰللہ غنہ اپبی بونی میں ثا ثگڑی ‪ /‬عمامہ کے پتچے ا پتے شر یر رکھتے تھے۔‬
‫‪4-‬‬

‫گولڈن رثگ کے ثال میارک‪ 2 :‬عدد‪ ،‬یہ پہاپت ثادر ثال میارک ہیں گرجہ رواپت میں اس رثگ کے ثالوں کا کونی ثذکرہ پہیں ملیا لیکن یہ ہماری دانست کے مطابق‬
‫اس طرح شمحھا خاسکیا ہے کہ سیاہ ثال میارک حب سفیدی میں پیدرتج پیدثل ہوثا ہے بو یہ حھ مراخل سے گزرثا ہے۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫سیاہ‪ ،‬گہرا تھورا‪ ،‬ہلکا تھورا‪ ،‬گولڈن‪ ،‬گہرا‪ ،‬ہلکا‪ ،‬سفید‬

‫اچیمال ہے کہ یہ گولڈن رثگ کے ثال میارک کحھ انسی پیدثلی کے مراخل کے دوران لتے گتے ہوں گے۔ معحزانی طور یر یہ گولڈن ہی رہتے اور اسی رثگ میں‬
‫اس کی لمیانی میں اصافہ ہورہا ہے۔ ستحان اّٰللہ‬
‫مشتج ‪(Mastaj): 5‬عدد (اسیاد کے ساتھ) اثک ثال میارک رسول اّٰللہ ﷺ کے داتیں ہاتھ میارک سے ہے حب کہ ثافی خار عدد داڑھی میارک سے ہیں۔‬
‫‪6‬‬‫ُحنہ شرنف (‪)Jubbah‬‬
‫‪7‬‬‫ُ‬
‫یردہ شرنف ‪(Burdah): 2‬عدد‪ ،‬دوبوں محیلف اسیاد کے ساتھ محفوظ ہیں۔ کحھ نسل المیارکین ‪Nasal-Mubarakeen‬نے رسول اّٰللہ ﷺ سے بوحھا‪،‬‬
‫‪8‬‬‫ُ‬
‫کیا وہ ُیردہ آپ نے ز پب بن فرماثا تھا۔ آپ ﷺ نے فرماثا ”نعم“ نعبی انسا ہی ہے اور یہ یردہ سیاہ رثگ کا ہے۔‬
‫‪9-‬‬

‫‪10‬‬‫‪11‬‬‫‪12‬‬‫‪13‬‬‫‪14-‬‬

‫الکٹری شرنف‬
‫‪ :Soak‬قم یض میارک کا اثک ثکڑا حو کابن کا پیا ہوا ہے ثدقسمبی سے اسے ا حھے اثداز سے محفوظ پہیں کیا گیا تھا۔‬
‫ثال میارک سیدثا حصرت ابوثکر صدبق رضی اّٰللہ غنہ‬

‫ثال میارک سیدثا عمر قاروق رضی اّٰللہ غنہ‬

‫ثال میارک سیدثا عیمان ذوال بوربن رضی اّٰللہ غنہ‬
‫ثال میارک سیدثا علی اب ِن انی ظالب رضی اّٰللہ غنہ‬

‫‪Okarvi.com‬‬

‫پہاں میں اثک اور ثات واصح کردوں کہ وہ چید ’آثار الن بویہ‘ جن کی سہادت ہمیں سید کے ساتھ پہیں ملبی ہم ان کا ثالواسطہ‬
‫ُ‬
‫تحزیہ کروانے ہیں حوں کہ یہ مہر رسول اّٰللہ ﷺ سے میسلک پہیں پیانی خارہی تھی اسی لتے ہم نے اس کے تحزیہ کے لتے اسے لیدن کی اثک‬
‫ُ‬
‫پہت یرانی اور یڑی لنیاریری میں تھخواثا جہاں محیلف دھابوں کا تحزیہ ہوثا ہے‪ ،‬ثاکہ اس م ِہر سیدثا عیمان رضی اّٰللہ غنہ کا تحزیہ ہوسکے کہ یہ دھات‬
‫کنبی یرانی ہے‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫ن‬
‫عالمہ کوکب بورانی اوکاڑوی نے حب ان سے درثافت کیا کہ میں نے کہیں پہیں یڑھا کہ خاروں خلقاے راسدبن نے ا پتے ثال لوگوں کو قشیم کتے تھے‪،‬‬
‫ن‬
‫الشتخ الحزرجی نے حواب دثا کہ پہت سے اصحاب کے ثاس خلقاے راسدبن کے ثال موحود تھے‪ ،‬یہ عین ممکن ہے کہ خلقاے راسدبن نے ا پتے ثال قشیم‬
‫پہیں کتے ہوں لیکن یہ تھی عین ممکن ہے کہ جس سحص ‪ /‬اسحاص نے آپ خلقاے راسدبن کے ثال موثڈھے ہوں اس نے اپہیں ا پتے ثاس رکھ لیا ہو‬
‫)اور محفوظ کرلیا ہو‬
‫‪-15‬‬
‫ثال میارک سیدثا حصرت امام الخشن ابن علی رضی اّٰللہ غنہ‪ 131 :‬عدد‬
‫ثال میارک سیدثا حصرت امام الخسین ابن علی رضی اّٰللہ غنہ‪ 64 :‬عدد‬
‫ثال میارک سیدثا حصرت امام الخسین رضی اّٰللہ غنہ‪ 1 :‬عدد‪ ،‬محیلف سید کے ساتھ‬

‫ثال میارک سیدثا حصرت امام زبن العاثدبن رضی اّٰللہ غنہ‬
‫اثگوتھی ‪ /‬مہر‪ :‬حصرت عیمان عبی رضی اّٰللہ غنہ‬

‫‪-16‬‬

‫‪-17‬‬

‫‪-18‬‬

‫‪-19‬‬

‫امر وافعہ ہے کہ م ِہر پ بوت رسول اّٰللہ ﷺ‪ ،‬حصرت ابوثکر صدبق رضی اّٰللہ غنہ اور‬
‫ِ‬
‫دور خالفت میں ان کے زیر اسیعمال رہی لیکن حوں کہ سیدثا حصرت عیمان رضی اّٰللہ غنہ کی انگلی پیلی تھی اسی لتے‬
‫حصرت عمر قاروق رضی اّٰللہ غنہ کے ِ‬
‫ُ‬
‫شروع میں سیدثا حصرت عیمان رضی اّٰللہ غنہ نے م ِہر پ بوت اپبی انگلی میں رکھی لیکن خار ماہ نعد اپہوں نے اپبی انگلی کے سایز کے مطابق پبی مہر پ بوالی۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫ً‬
‫ُ‬
‫۔ لنیاریری والوں نے اس مہر کا تحزیہ کرکے پیاثا کہ اس قسم کی دھات نقرپیا ‪ 900‬سال پہلے مففود ہوخکی ہے‪ ،‬حوں کہ سیدثا حصرت‬
‫عیمان رضی اّٰللہ غنہ نے یہ مہر سال ‪ 7‬ہحری میں پیانی تھی بو لنیاریری کا تحزیہ اس کے اصلی ہونے کا واصح پ بوت ہے۔‬
‫م‬
‫کحل (‪)Makhal‬۔ (‪ )Kohl container‬کوک (‪ )Kook‬لکڑی کے کور میں‪ ،‬یہ شرمہ دانی سیدثا قاطمہ‬
‫‪20‬‬‫الزہرا رضی اّٰللہ عنہا سے میشوب ہے۔‬

‫نع ِال سیدپیا حصرت قاطمہ رضی اّٰللہ عنہا‪ ،‬حو کہ اہ ِل پ یت خاثدان سے خاصل ہوا‪ ،‬اس نعال یر اتھی تھی کحھ حمڑا‬
‫‪21‬‬‫(‪ )Leather‬موحود ہے۔‬
‫ثال میارک سیدثا حصرت علی ابن ظالب رضی اّٰللہ غنہ‪ ،‬دوشری سید کے ساتھ‬
‫‪22‬‬‫‪23‬‬‫‪24-‬‬

‫‪ ،Soak‬سیدثا حصرت علی ابن انی ظالب رضی اّٰللہ غنہ (محیلف اسیاد کے ساتھ)‬
‫‪ ،War hat‬سیدثا حصرت علی ابن انی ظالب رضی اّٰللہ غنہ آپ اسے ا پتے شر یر رکھ کر‬

‫تھر عمامہ پہنتے تھے۔‬
‫ُ‬
‫یردہ‪ ،‬حصرت سیدثا حعقر الصادق رضی اّٰللہ غنہ‬
‫‪25‬‬‫‪Okarvi.com‬‬

‫عالمہ اوکاڑوی ‪:‬‬
‫د پتے ہیں؟‬

‫آپ ذفٹرہ شرنف ثا دثگر مونے میارک کو کیسے عسل‬

‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬فصیلۃ الشتخ نے کیاب کے اثک ثاب کی طرف اسارہ‬
‫کرنے ہوے حواب دثا کہ اس میں عسل شرنف کی پہلی نقرپب کی نفصیل درج‬
‫ہے۔ عسل کا مفصد ثال میارک سے ثانی کے ذرنعہ یرکت خاصل کرثا ہے۔ ہم‬
‫اسے ہر سال ‪ 23‬رمصان کو عسل د پتے ہیں۔ ہم ثال میارک کو ثالواسطہ عسل‬
‫د پتے ہیں نعبی ثال میارک اثک کٹڑے میں لنتے ہونے ہیں ہم اس کٹڑے یر‬
‫اثک خاص اثداز و یرپ یب سے زم زم کا ثانی پہانے ہیں یہ ثانی کٹڑے سے ذفٹرہ‬
‫شرنف کو لگتے ہوے گزرثا ہے۔ یہ سارا ثانی ہم دوثارہ اکیھا کرلنتے ہیں۔ زم زم کے‬
‫نعد ہم اسے عام ثانی سے عسل د پتے ہیں کٹڑے کے ثاہر سے اور اگر ان میں‬
‫کونی تخور (‪ )Bakhoor‬کا سایہ نظر آے بو ہم اسے ز پ بون کے صابن سے عسل‬
‫د پتے ہیں۔ اس کے نعد ہر ثال کو پہاپت اخنیاط سے ثاری ثاری ثکڑ کر مشعل کی‬
‫ضورت کردثا خاثا ہے۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫(اس موفع یر عالمہ کوکب بورانی اوکاڑوی نے شراہا اور کہا کہ حوں کہ الشتخ الحزرجی کو اّٰللہ نعالی نے اہم فرنضہ اور ذمہ داری سوپبی ہے‪ ،‬اس لتے اّٰللہ نے ان‬
‫کو فہم اور شمحھ تھی عطا کر رکھی ہے کہ وہ آثار الن بویہ کی حقاظت و ثگہ ثانی اجشن اثداز سے کرسکیں)‬
‫الشتخ الحزرجی نے اپبی گقت گو کو آگے یڑھانے ہوے کہا کہ کیاب کے اگلے ثاب میں مونے میارک کے خار میں لگتے والی وثکس (‪ )Wax‬کو پیدثل کیسے‬
‫کیا خاثا ہے اور اسے العالنہ (‪ )Al-Ghaaliyah‬میں کیسے ِمکس (‪ )Mix‬کیا خاثا ہے‪ ،‬کا ثذکرہ ہے‬
‫ً‬
‫۔ العالنہ (‪ ،)Al-Ghaaliyah‬خار حوش بوؤں کا مرکب ہے‪ ،‬حو رسول اّٰللہ ﷺ اسیعمال فرمانے تھے۔ ضمیا اثک ثات یہ کہ حھونے سایز کے ذفٹرہ شرنف کی نقرپب ِ‬
‫عسل الگ ہونی ہے۔ اس کے لتے ثارتخ ‪ 27‬رحب ہے۔ یہ نقرپب ضرف ‪100‬سے ‪ 200‬خاص لوگوں کے درمیان ہونی ہے لیکن یڑے ذفٹرہ شرنف کی نقرپب ‪23‬‬
‫رمصان المیارک کو ہونی ہے۔‬
‫ت‬
‫العالنہ حوش بو کو حب میں نے پیار کرکے مدپنہ کے کحھ لوگوں کو اثک قلیل مقدار میں ً تحف ًۃ ھتحی بو اپہوں نے اس کی نصدبق بوں کی کہ انسی ہی حوش بو‬
‫ش‬
‫بو رسول اّٰللہ ﷺ کے جحرہ میارک سے آنی ہے۔ اپہوں نے بوحھا کہ کیا محھے حواب کے ذرنعہ اسے پیانے کا طرنفہ پیاثا گیا ہے۔ مٹرا حواب نقی میں تھا ک بوں کہ میں محھیا ہوں‬
‫ل‬
‫کہ اگرجہ یہ وقق امر ا عطیم من خاپب اّٰللہ ہے لیکن یہ ثالواسطہ حواب پہیں ہے۔‬
‫اثک مشہور ثاخر عیدالصمد فرنسی کی حو متحدہ عرب امارات میں حوش بوثات کا کاروثار کرنے ہیں‬

‫۔ اثک دفعہ میں ان کے ساتھ سقر کررہا تھا دپبی سے خدہ کی طرف۔ جہاز میں‪ ،‬میں نے ان کے ہاتھ یر تھوڑی سی ”العالنہ“ حوش بو‬
‫لگادی‪ ،‬وہ اس حوش بو سے اس قدر مسخور ہوے کہ محھ سے نے در نے سوال کرنے شروع کرد پتے کہ میں نے اسے کب سے اور کہاں سے خاصل کیا؟‬
‫حب میں نے اپہیں پیاثا کہ یہ حوش بو میں نے حود پیار کی ہے بو اپہوں نے کہا ک بوں یہ ہم اسے ثاہمی تحارت کے طور یر پیار کربں؟ ک بوں کہ انسی حوش بو‬
‫ث‬
‫میں نے کیھی پہیں سو گھی لیکن میں نے ان کی تیش کش مشٹرد کردی۔ اگرجہ محھے رسول اّٰللہ ﷺ سے خاص اخازت ہے کہ میں اس حوش بو اور عسل (مونے‬
‫ن‬
‫میارک) کے ثانی کو تھی پتچ سکیا ہوں لیکن ہم ان کو صدفۃلرسول اّٰللہ ﷺ فری قشیم کرنے ہیں‬
‫اور اگر ہم اس حوش بو کو پتحیا ہو بو ہمیں پیاثا گیا ہے کہ اس سے خاصل سدہ آمدن کہاں اسیعمال کرنی ہے۔ رسول اّٰللہ ﷺ نے ہمیں اس آمدن کو اسیعمال‬
‫ن‬
‫کرنے کے تین محیلف یرچتحات پیانی ہیں لیکن اتھی ثک ہم اسے فری قشیم کرنے ہیں۔‬
‫’العالنہ‘ حوش بو میں اسیعمال ہونے والے تمام اخزاے یرکنبی کو کیاب میں نفصیل سے درج کردثا گیا ہے یہ اخزاء پہاپت فیمبی ہیں۔ اثک‬
‫ً‬
‫ً‬
‫کلو گرام ’العالنہ‘ کو پیار کرنے یر فرپیا ‪ 2‬الکھ درہم (‪ 55‬الکھ ثاکشیان رونے) مالیت کی رقم تنبی ہے اس میں اسیعمال ہونے والے اخزاء میال عود اور َورد پہت‬
‫فیمبی ہیں۔ ساالیہ زثارت کے موفع یر خاص شرکاء اپیا یرف بوم (حوش بو) لے آنے ہیں اور ہم اس میں یر ًکۃ عرق شرنف سامل کرد پتے ہیں۔‬

‫‪Okarvi.com‬‬

‫م‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬آپ کب ثک اس کیاب کی ثدوبن کمل کرلیں گے اور کب اسے سا نع کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں؟‬

‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬ان ساء اّٰللہ پہت خلد‪ ،‬اصل میں تحھلے ہی ہقنہ ہمیں دو مزثد ’آثار‘ وضول ہوے ہیں اور ہمارا چیال ہے کہ کحھ مزثد آثار ان ساء اّٰللہ‬
‫ع یقرپب ہمیں ملیں گے لہذا ہم ان کو اسی کیاب میں درج کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔‬
‫ُ‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬آپ اس کیاب کو کنبی زثابوں میں سا نع کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں؟ مٹری راے میں آپ اسے عرنی کے عالوہ انگلش اور اردو میں تھی‬
‫سا نع کرواتیں؟‬

‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬ان ساء اّٰللہ ہم اس کیاب کو محیلف زثابوں میں یرحمہ کرواکر سا نع کرواتیں گے جن میں انگلش‪ ،‬فرانسیسی‪ ،‬روسی اور ہشیابوی زثاتیں سامل‬
‫ہیں۔‬
‫ً‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬مٹری راے ہے کہ آپ اس کیاب کو یرچتحا ان زثابوں میں‬
‫سا نع کربں حو دپیا تھر کے مسلمابوں میں اکٹرپبی زثان کے طور یر اسیعمال ہونی ہیں؟‬

‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬ان ساء اّٰللہ ہم انسا ہی کربں گے۔ اب میں آپ کو پیاثا ہوں کہ ”الکٹری الشرنفہ“ کا آثار ہم ثک کیسے پہتحا؟ میں کالی کٹ (کٹراال۔ اثڈثا)‬
‫میں ساالیہ کانقرنس میں شرکت کے لتے ستخ ابوثکر کے ہمراہ گیا۔ کانقرنس کے نعد ہمیں خدپث کے موضوع یر اثک اور کانقرنس میں شرکت کرثا تھی حو پیارس (ورانسی۔‬
‫اثڈثا) میں کحھ دبوں نعد م یعقد ہوثا تھی۔ اس دوران میں ا پتے اثک ستخ محمد حف یظ سے ملتے چیدرآثاد خال گیا۔ مٹرے ہمراہ خامعہ االزہر کے کحھ اساثذہ تھی تھے۔ اثک زایر حو‬
‫ً‬
‫وہاں یر تھہرا ہوا تھا اس نے ہمیں پیاثا کہ ستخ صاحب سوے ہوے ہیں۔ فرپیا ‪ 7‬تچے صتح وہ مٹرے کمرے میں آے اور محھے پیاثا کہ اپہوں نے اتھی اتھی حواب میں‬
‫دثکھا ہے کہ پبی کریم ﷺ نے ارسار فرماثا کہ ’الکٹری شرنف‘ احمد الحزرجی کو دے دو۔‬

‫میں یہ سن کر پہت حوش ہوا اور ساتھ ہی یہ سوچتے لگا کہ ’الکٹری شرنف‘ کیا ہے؟ حوں کہ اثڈثا اور متحدہ عرب امارات کے ثایم میں ‪ 30 :1‬گھنتے‬
‫َ‬
‫کا فرق ہے۔ میں نے نے خنبی سے اپ یطار کیا ثاکہ متحدہ عرب امارات میں صتح کے ‪ 7‬تچے میں وہاں کے علما سے رانطہ کرسکوں اور یہ خان سکوں کہ الکٹری شرنف کیا‬
‫ہے؟ میں نے ِمصر کے علما سے تھی رانطہ کیا ثاکہ اس کے م یعلق معلومات خاصل ہوسکیں؟ مصر کے علما نے محھے پیاثا کہ اگرجہ ان کی معلومات میں انسا کونی حوالہ‬
‫ً‬
‫پہیں ہے ثاہم محھے قکر کرنے کی ضرورت پہیں ہے ک بوں کہ رسول اّٰللہ ﷺ نے حود ارساد فرماثا ہے کہ ”امرۃ االحمد ثا لکٹری“ اس لتے یہ نقنیا آپ کی طرف آے گا۔‬
‫میں ا پتے ہوثل میں وانس آگیا۔ مٹرے سیکرتٹری نے محھے پیاثا کہ کحھ دبوں کے نعد محھے ا پتے اثک دوست سے ملتے اثک دوشرے ملک میں‬
‫خاثا ہے۔ اسی رات محھے بوں لگا کہ خیسے مٹرے دورہئ اثڈثا میں کونی کمی رہ گبی ہے کیا یہ اس لتے ہے کہ میں اس دفعہ ممنبی پہیں گیا؟ ک بوں کہ انسا کم ہی ہوثا‬
‫ہے کہ دورہئ اثڈثا میں ممنبی خانے نغٹر وانس آؤں؟ چیاں جہ میں نے ا پتے سیکرتٹری کو پیاثا کہ مٹرا یراثا سیڈول پیدثل کرکے مٹرے لتے ممنبی خانے کے ثکٹ کا‬
‫پیدونست کرو۔ مٹرے سیکرتٹری نے یڑی دسواری سے انسا کیا ک بوں کہ اسے ممنبی کے لتے یراہ راست قالپٹ پہیں مل رہی تھی ثاہم ہم سام ثاتچ تچے ثک ممنبی کے‬
‫ہوثل میں داخل ہو خکے تھے۔ ہم نے وہاں محیلف دوسبوں سے قون یر رانطہ کیا ثاکہ سام کا کھاثا اکیھے کھاسکیں۔ اسی دوران محھے اثک ستخ صاحب ثاد آے اور اسی وفت‬
‫میں نے ان سے ملتے کا ارادہ کیا۔ اثک دفعہ اثک دوست نے محھے ”واسطے“ کے طور یر ان ستخ سے مالنے کے لتے لے گتے تھے۔ مٹرا دوست ان ستخ صاحب سے کحھ‬
‫خاصل کرثا خاہیا تھا اور ستخ صاحب نے کم ِال مہرثانی سے مٹرے احٹرام میں اپہیں وہ عطا کردثا تھا خاالں کہ اس سے پہلے وہ ستخ صاحب اس سحص کو پہت مرپنہ انکار‬
‫کرخکے تھے۔‬

‫ہمیں ان ستخ صاحب کا پیا لگانے میں کحھ دیر ہوگبی ک بوں کہ وہ ہسنیال میں گتے ہوے تھے۔ ہم نے رات کے کھانے کا یروگرام مل بوی کیا اور ان ستخ‬
‫ع‬
‫صاحب کو ملتے ان کے گھر خلے گتے۔ خیسے ہی میں ان کے گھر ان کے کمرے میں داخل ہوا وہ حوسی سے جہک ا تھے۔ خزرجی‪ ،‬خزرجی۔ السالم لیکم ک یف‬
‫خالک۔ کیسا ہے؟ ستخ؟ تھیک ہے؟ تھر وہ اتھ کھڑے ہوے‪ ،‬میں نے کہا کہ ستخ صاحب یراہ مہرثانی اپبی خگہ تنیھے ر ہنتے اور حود کو نکل یف مت دبں لیکن‬
‫ً‬
‫اپہوں نے فرماثا کہ پہیں آپ مٹرے ساتھ آ تیں وہ محھے اثک حھونے سے کمرے میں لے آے یہ کمرہ فرپیا ‪ 2‬مثٹر حوڑا اور ڈیڑھ مثٹر لمیا تھا۔ اس میں‬
‫ضرف دو کرسیاں رکھی ہونی تھیں۔ اثک یڑی اور اثک ثالسیک کی حھونی کرسی تھی۔ ستخ صاحب نے محھے یڑی اور آرام دہ کرسی یر نصد احٹرام پیھاثا اور حود ثالسیک‬
‫کی حھونی کرسی یر تنیھ گتے۔ ہم دو میٹ ثک وہاں تنیھے رہے اور تھر وہ دوثارہ کھڑے ہو گتے اور اثک یڑے ثکس ثک پہتچے حو وہاں رکھا ہوا تھا۔ اپہوں نے اس کا‬
‫ثاال کھوال بو اس میں سے اثک اور ثکس نکال۔ اپہوں نے اس کا ثاال کھوال بو اس میں سے اثک اور ثکس نکال۔ اس طرح وہ ثکے نعد دثگرے ثکس اور ثالے کھو لتے‬
‫رہے اور آخرکار اثک ثکس سے رسول اّٰللہ ﷺ کی ’زلف شرنف‘ نکال کر محھے عطا کردی تھر اپہوں نے محھے پیاثا کہ وہ محھے خار ماہ سے ثالش کررہے تھے ثاکہ یہ‬
‫اماپت محھ ثک پہتحا سکیں‬

‫ستخ صاحب نے محھے پیاثا کہ یہ زلف شرنف ان کے ثاس ‪ 8‬سو یرس سے محفوظ ہے۔ سیدثا‬
‫عوث االعظم حصرت عیدالقادر چیالنی رضی اّٰللہ غنہ کے عہد سے اور ان کی عطا کی ہونی سید کے ساتھ ان‬
‫کے خاثدان کے ثاس ہے۔ اپہوں نے پیاثا کہ رسول اّٰللہ ﷺ نے حواب میں محھے ہداپت کی کہ میں‬
‫’زلف شرنف‘ کو الشتخ الحزرجی کے حوالے کردوں۔ اسی وجہ سے میں آپ کی ثالش میں شرگرداں تھا۔‬
‫پ م‬
‫ظ‬
‫م‬
‫اس آثار کے محھے حوالے کرنے کے نعد وہ ہت ین ہو گتے۔‬

‫اس کے نعد اپہو ں نے محھے کہا کہ ستخ الحزرجی؟ کیا آپ کو ’الکٹری شرنف‘ خا ہنتے؟ ح ّنہ‬
‫شرنف حو رسول اّٰللہ ﷺ نے ”االشراء و المعراج“ کے موفع یر زپب بن فرماثا تھا؟ یہ الکٹری‬
‫شرنف یرکی سے خاصل کیا گیا تھا۔ یہ سلطان چیدر علی تن بو کے ثاس محفوظ تھا حوکہ میشور کے‬
‫خکمران تھے۔ ان کے نعد یہ سلطان فتح علی تن بو کے ثاس من یقل ہوگیا۔ سلطان فتح علی تن بو‬
‫اثگریز قوج سے پہت پہادری سے لڑنے ہوے سہید ہو گتے حو میشور یر ف یضہ کرثا خا ہتے تھے۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫‪1799‬ء میں اثگریز قوج نے میشور یر ثاآلخر ف یضہ کرلیا۔ الکٹری شرنف کو تن بو سلطان کے اثک فرپبی رسنہ دار نے مسحد سے خاصل‬
‫ً‬
‫کرکے ا پتے ثاس محفوظ کرلیا ثاکہ یہ ثادر آثار اثگریزوں کے ہاتھ یہ لگ سکے۔ یہ آثار ان کے خاثدان کے ثاس فرپیا ‪ 150‬سال سے ت ھا‬
‫وہ ہر سال رپ یع االول کے موفع یر اس کی زثارت کا اہیمام کرنے تھے۔ اس دوران اثڈثا کی آثادی روز یروز یڑ ھتے ہوے پہت زثادہ‬
‫ہوگبی اور بوں اس آثار ”الکٹری شرنف‘ کی زثارت کا اہیمام و اپ یطام مشکل ہوثا خالگیا۔ لہذا تح ھلے ‪ 80‬یرسوں سے کسی نے تھی الکٹری‬
‫شرنف کو ہاتھ ثک پہیں لگاثا اور یہ ہی عوام کو زثارت کروانے کے لتے کھوال گیا۔ ضرف دو ہفتے فیل اس خاثدان نے ف یصلہ کیا کہ‬
‫وہ اس آثار الکٹری شرنف کو اس کے حوالے کردبں گے حو اس کے ثدلے اثک پہت یڑا اسالمک کمیلیکس نعمٹر کرے گا‪ ،‬جس میں‬
‫اثک مسحد‪ ،‬اثک فرآن اسکول سامل ہو‪ ،‬ثاد رہے یہ ف یصلہ اسی دن ہوا حب ہم کٹراال میں دو ہفتے فیل پہتچے تھے اور ہمیں الکٹری‬
‫شرنف کے ثارے میں حٹر ملی تھی۔ ۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬ماساء اّٰللہ نعبی اثک حود کار اپ یطام کے تحت یہ آثار شرنف آپ ثک پہتچ گیا؟‬
‫پ‬
‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬ان ساء اّٰللہ ع یقرپب ہمیں امید ہے کہ کحھ مزثد آثار ہم ثک ہتچیں گے جن کا ثذکرہ ہم اس کیاب میں کربں گے۔‬
‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬آپ ان آثار کو محفوظ پیانے کے لتے مسیفیل میں کیا ارادہ رکھتے ہیں؟‬

‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬اس سلسلے میں ہم پہت زثادہ کام کرخکے ہیں اور اس کا ڈیزابن پہلے ہی بن حکا ہے۔ اصل میں ہمارا ارادہ ”مرکزی تنیک“‬
‫کی طرز یر اثک پہت یڑی عمارت‬
‫نعمٹر کرنے کا ہے۔ اس عمارت کی مصبوطی کے لتے پہت زثادہ لوہے اور تحری کی دبواربں پیانی خاتیں گی ثاکہ آثار الن بویہ کسی قسم کی‬
‫س‬
‫حوری سے محفوظ خگہ یر رکھی خاسکیں۔ یہ ہال تما کمرہ خاص طور یر مرکزی تنیک کے الکر روم کی طرز یر پیاثا خاے گا حوکہ زیر زمین تیشری طح‬
‫یر ہوگا۔ آثار شرنف دھات کے پتے ہوے ‪x80x30 5‬مثٹر یڑے ثکس میں ر کھے خاتیں گے اور ان کے اثدر قکس کرد پتے خاتیں گے‬
‫ثاکہ کسی تھی قسم کی حوری سے محفوظ کیا خاسکے۔ اس قدر مصبوط عمارت کو زیر زمین ہی پیاثا خاسکیا ہے لہذا یہ ف یصلہ کیا گیا ہے کہ اسے‬
‫اویر کی مٹزل کی تحاے زیر زمین نعمٹر کیا خاے۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫عالمہ اوکاڑوی ‪ :‬عالمہ اوکاڑوی نے الشتخ الحزرجی کو کحھ مفید آراء اور مشورے د پتے ثاکہ ”آثار الن بویہ“ کو محفوظ پیانے ہوے ان کی ثکریم‬
‫میں کونی کمی یہ رہ سکے۔ الشتخ الحزرجی نے عالمہ اوکاڑوی کے مشوروں کو شراہا اور نشید کیا۔ اس کے نعد عالمہ اوکاڑوی نے الشتخ الحزرجی کا پہہ‬
‫دل سے سکریہ ادا کیا کہ اپہوں نے یڑی بوجہ اور محیت سے ان کے سوالوں کے حواثات د پتے اور ان ثک معلومات کی رسانی کی۔ عالمہ‬
‫اوکاڑوی نے کہا کہ حوں کہ یہ تمام اہم معلومات اثک کیاب کی ضورت میں اکھبی کی خارہی ہیں حوکہ اثک پہت یڑی کاوش ہے۔ یہ کیاب‬
‫’آثار الن بویہ‘ سے میسلک تمام سواالت کا حواب خاصل کرنے میں ممدو معاون ثاپت ہوگی۔ عالمہ اوکاڑوی نے مزثد فرماثا کہ حوں کہ آپ (الشتخ‬
‫الحزرجی) سے پہلی مالقات ہے لہذا میں نے ضرف تنیادی سواالت ہی زیر تحث الے ہیں اور آپ کو زثادہ ُسیا ہے اور میں اس تحث میں محطوظ‬
‫ہوا ہوں۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫الشتخ الحزرجی ‪ :‬ان ساء اّٰللہ حو معلومات درکار ہوں میں ان کا حواب د پتے کا ذمہ دار ہوں اور اس سلسلے میں کونی‬
‫کوثاہی پہیں کروں گا۔‬
‫اتٹروبو کے نعد الشتخ الحزرجی نے عالمہ اوکاڑوی اور ان کے رفقاء کے ساتھ رات کا کھاثا کھاثا اور حوب‬
‫مہمان بوازی کی۔ الشتخ الحزرجی ثالسنہ اثک تھربور سحصیت کے مالک ہیں جن میں عاخزی اور اثکساری ثدرجہ ایم موحود‬
‫م‬
‫ہے۔ اپہوں نے ”آثار الن بویہ“ کے ثارے میں کمل معلومات پہتحانے میں تمام سواالت کا چیدہ تیسانی سے حواب‬
‫دثا۔ اپہوں نے عالمہ اوکاڑوی کو مونے میارک میں لنتے ہوے کٹڑے اور عسل سدہ ثانی کے فیمبی تحانف تھی تیش‬
‫کتے۔ اپہوں نے عالمہ اوکاڑوی کو اپبی مط بوعہ کیب تھی تحانف میں تیش کیں۔ عالمہ اوکاڑوی نے الشتخ الحزرجی کی‬
‫کیاب دوسبی اور علم سے محیت اور مسلک ِ حق کے لتے خدمات کو پہت شراہا۔‬
‫‪Okarvi.com‬‬

‫الشتخ الحزرجی کے ہاں ثاقاعدگی سے ذکر اّٰللہ و نغت النبی کی محاقل کا اہیمام کیا خاثا ہے اور ان میں چید علما کرام کے لیکحر تھی ہونے ہیں۔ الشتخ الحزرجی نے‬
‫ث‬
‫عالمہ اوکاڑوی کو مدعو کیا کہ وہ چید روز نعد ہونے والی محلس میں لیکحر دبں لیکن ڈاکٹر اوکاڑوی کو ا پتے وعدوں کی کمیل کے لتے وانس ثاکشیان آثا تھا اس لتے اپہوں‬
‫نے اگلی ثار کا وعدہ کیا کہ ان ساء اّٰللہ وہ ضرور ان کی محلس میں شرکت کربں گے۔‬
‫آخر میں الشتخ الحزرجی نے عالمہ اوکاڑوی اور ان کے رفقاء کو یڑے پیاک سے‬

‫رحصت کیا۔ و ہ حود خل کر مہمابوں کے ساتھ گھر کے صدر دروازے ثک آے اور اس وفت ثک کھڑے رہے حب ثک عالمہ اوکاڑوی کی گاڑی اس عالقے سے ثاہر‬
‫پہیں نکل گبی۔‬

‫تخرپر‪ :‬شیخ عت یق الرحمن‪ ،‬انو ظہبی‬
‫‪Okarvi.com‬‬

Okarvi.com

Okarvi.com

Okarvi.com

Okarvi.com

Okarvi.com

Okarvi.com

Okarvi.com

Okarvi.com

Okarvi.com

(I, Shaiekh Ateeq ur Rahmaan wrote
this according to a recording which
was made during the meeting, so
please excuse me if there is any
mistake in spelling or any word is
misunderstood.)
Okarvi.com

Presented by Maulana Okarvi Academy [Al-Aalami]-2015
Okarvi.com