You are on page 1of 1

‫ن‬

‫ن ن‬
‫ئ‬
‫ت‬
‫ٹ‬
‫ش‬
‫ش نن‬
‫ئ نن‬
‫ک نیی پنپ نلزم اور سوسلزم دونوں انسان کے بب ننائے ہہوئے ن ظام ہہییں‪ -‬مییں اسلیمی معاشی ن ظام کی حمایبت کریا ہہوں بجو نخدا کا بب نناییا ہہوا اور دونوں سے‬
‫ض‬
‫ہے‪-‬‬
‫اف ل ہ‬
‫ا‬
‫ت‬
‫ت‬
‫ت‬
‫ت‬
‫ت‬
‫ت‬
‫ش‬
‫بب ک ناببییں موبجود ہہییں شب‬
‫مییری ک نابنوں کے ش ینلف شپپر ‪ 20‬کے قر ی ن‬
‫سے ‪ 3‬نو مییں ییہاں سے ببییٹٹھ کر ببھی دییکھ سک نا ہہوں‬
‫یں‬
‫م‬
‫ان‬
‫یں‪-‬‬
‫ہ‬
‫تی‬
‫کر‬
‫ی‬
‫دعو‬
‫یہ‬
‫جو‬
‫ہ‬
‫ت‬
‫ی‬
‫ی‬
‫ش‬
‫ن‬
‫ی‬
‫ن‬
‫ت‬
‫ش‬
‫ن‬
‫ع‬
‫ظام از م یناں اییم یذیپر ہہییں‪ -‬مییں آپ کو ان‬
‫لیمی معاش ین‬
‫اب الدیین ا ظمی‪ ،‬اسلم اور معاشی پرقی ازی شعمر نپخ ناپپڑا‪ ،‬اسلیمی نمعاشی ن ن‬
‫ات از شہ ت‬
‫ب تجو کہ "اس ن‬
‫ئ‬
‫ت‬
‫س‬
‫ل‬
‫ہ‬
‫ب‬
‫ہ‬
‫ہ‬
‫ہوں اور جو مییں کھ رہہا ہوں وہ‬
‫نوں کے یام ش ا لئ‬
‫اک نا ب ت‬
‫ے بب نا نرہہا ہوں ی ن‬
‫اکہ آپ بخان سکییں کہ نمییں اسلیمی معاشی ن ظام نکے موضوع پپر کاقی کپچھ تپپڑھ پچکا ئ‬
‫ب‬
‫ضوع پپر کم از تکم ‪ 3‬دربجن ک ناببییں بجو کئی سالوں مییں پپڑھی ہہییں‪-‬‬
‫مو‬
‫اس‬
‫اور‬
‫یں‬
‫ہ‬
‫ھے‬
‫ڑ‬
‫پ‬
‫ئے‬
‫یں‬
‫م‬
‫جو‬
‫ہے‬
‫پر‬
‫ناد‬
‫ا‬
‫کی‬
‫ین‬
‫م‬
‫ا‬
‫ض‬
‫اور‬
‫ثوں‬
‫نا‬
‫عداد‬
‫ہ‬
‫پ‬
‫م‬
‫بب‬
‫ح‬
‫ی‬
‫ی‬
‫ی‬
‫پ‬
‫پ‬
‫ہ‬
‫ان لت‬
‫ب ن م‬
‫ن ٹ‬
‫ئ‬
‫ش‬
‫ین ن‬
‫ے علوہ اس ببپ یناد پپر ببھی کہ مییں اپنئی زیدگی کے کئی سال ینونیثورسئی کی س طح پپر معاش ینات پپڑھایا رہہا ہہوں‪-‬‬
‫ا سک‬
‫ا‬
‫ئ‬
‫ت‬
‫ن‬
‫ن‬
‫کسی ببھی عاششی ن ن ظام )طریتقہ پب نداوار( کا سب سے اہہم سوال ہے کہ عاششی وسای‬
‫ے ک ینا بخا تیا‬
‫کے کن ٹ نیرول مییں ہہییں اور ان کو کن ٹ ئیرول کیس‬
‫کس‬
‫ل‬
‫ن‬
‫ن‬
‫ہ‬
‫ی ی‬
‫تم‬
‫م‬
‫ن‬
‫ن ت‬
‫ت ن‬
‫ے گا بیات گول داپروں مییں گھومشئی‬
‫ے کو یہییں بسچ تھ‬
‫قاری شاس ببپ ی تنادی نکئ‬
‫جب تیک‬
‫ہے؟ مییں اس پپر ااس سے تزییادہ زور یہ ٹییں دے سک نا شکیثو تیکہ ب ت‬
‫ٹ‬
‫ہ‬
‫ہے گی‪ -‬زری یالیسی‪ ،‬مال ناتی یالیسی‪ ،‬ب ین‬
‫ل‬
‫پرونییکشنیزم ببم قابیلہ بپرآمدی پب ینداوار ییہ تمام پچی یزییں کسی خکومت کی معاشی‬
‫کس‪،‬‬
‫ر‬
‫ت‬
‫ش‬
‫ہ‬
‫زکواۃ‪ ،‬عشر‪ ،‬ئتبجار نتی پیا ی نسی‪ ،‬پ ت‬
‫پ‬
‫ی‬
‫پ‬
‫ن‬
‫ت‬
‫ن‬
‫پیالیسی نو تب بندییل کر سکئی ہہییں‪ -‬ان سے "معاشی ن ظام" پپر کوتی قرق یہییں پپڑیا‪-‬‬
‫ا‬
‫ئ‬
‫ئ‬
‫ت‬
‫ئ‬
‫ش‬
‫ش نن‬
‫اب ییہ سوال نان لوگوں سے ئپنوپچھا بخائے بجو اسلیمی معاشی ن ظام کی حمایبت کرئے ہہییں کہ معاشی وسایل )ذرا تع پب ینداوار( کس کی ملکییت ہہوں‬
‫ا‬
‫ے گا‬
‫ے کننٹیرول ک ینا بخائے؟ آپ تکو ندو مییں سے اییک بجواب مل‬
‫اور ان کو کیس‬
‫ہے )سرماییہ داری(‬
‫‪ (1‬اسلم م ی تیں قلیحی ر ی ئیاست کے سابھ ن ٹ بتجی ملکییت کی ابخازت ہ‬
‫ہے ذرا تع پب ینداور کو عوام کنیرول کرییں‪-‬‬
‫‪ (2‬اسلم کہ نا ہ‬
‫ن‬
‫ن‬
‫ئ‬
‫ن‬
‫ن‬
‫ن‬
‫ت‬
‫ن‬
‫ت‬
‫ے وہ‬
‫نداوار عمویمی طور پ نپر بتجی ملکییت مییں ہہو یگ‬
‫ے کہ وہ تمام لوگ بجو کہئ‬
‫ی نیہ بیات آپ پپر ٹبیہت واضح ہہو بخاتی پخا ہ یہئ‬
‫یں ذرا تع پب‬
‫ے تہہییں کہ اسلیمی ن ظام م ی ئ‬
‫ی‬
‫ن‬
‫ٹ‬
‫ک‬
‫ص‬
‫ک‬
‫س‬
‫ے ہہ ی نیں نکہ اسلم نمییں ذرا تع پب ی تنداوار کا کنیرول عوام یبٹھالییں گےن درا ل‬
‫سب بجو ہئ‬
‫یں‪ -‬ن‬
‫ہے ہہ ی ن‬
‫اور وہ ت‬
‫ببپ ی شنادی طور پپر ییپپ نلزم کی حمایبت کر ر ہ‬
‫ن‬
‫ی‬
‫ہ‬
‫سے پپکارا‬
‫ے ا نفکار کو ک ی انا یام دیب نا تپخا ت ہئ‬
‫سے قرق ہییں پپڑیا کہ نوہ ا پنئ‬
‫اس ش‬
‫ہے ہہییں‪ -‬ت‬
‫ے ہ نہییں‪ -‬اییک گ تلب کو ناگر کسی ناور تیام ت ئ‬
‫لزم اکی حمایبت کر ر ہ ن‬
‫سوس ئ ت‬
‫نط‬
‫ح‬
‫ی‬
‫ی‬
‫م‬
‫بخائے نو اس کی مہک کم ہییں ہہو بخاتی )سییکسپنییر(‪ -‬کسی پچییز کا یام بیدئے سے اس کی قییقت ہییں بیدل بخاتی‪ -‬ییہ ببپ ینادی قی ح قانق ہہییں‪-‬‬
‫ا‬
‫ن‬
‫ت‬
‫ات‬
‫بب‬
‫بب‬
‫تن‬
‫قرآن و خدیبث کو اننئی ہ‬
‫بت ییا‬
‫آپ‬
‫ہی مرتب ببہ پ ت‬
‫ن‬
‫ن‬
‫ہے ییا اس سے ن ھی زییادہ اگر ن آپ پخاہہنییں اور آپ کو اییک ھی این تسی آ ی ت‬
‫پڑھ لییں بجپ نا ئمییں ئے پپڑھا ہ‬
‫ے گی بجو مسلمانوں کو ببت ناتی ہہو کہ ذرا تع پب نداور کس کی مل ییت م ی تیں ہہوتی پخاہہ ی ی‬
‫خدیبث ی‬
‫م‬
‫قرآن‬
‫یں ہہوتی پ نخاہہ ی نیں‪ -‬مگر نوہ نلوگ بجو کہئ‬
‫ل‬
‫یں‬
‫ہ‬
‫ن‬
‫ی‬
‫ے ہہییں کہ ن‬
‫ی‬
‫صیں ییا ہ ی ا ن‬
‫نکن‬
‫م ی نیں ت نتمام م‬
‫یارے نمییں عور‬
‫ہوں ئے جود ا تپنئ‬
‫ہو‬
‫ہے اس‬
‫خصوص سوالت ن تکا بجواب تمو ب یجود‬
‫یات پپر بیہت ح قا ہ ئ‬
‫ہ‬
‫ت‬
‫ے افکار ش کے ب‬
‫ب‬
‫ن‬
‫ئے ہہییں‪ -‬ا ت ل م تییں ای ت‬
‫ن‬
‫تی تب بندییل یناں وا قع ہہوتی مییں وقت کے سابھ‪ -‬معاشی و شش یناشی ن ظام ان‬
‫و قکر یہییں ک ینا ہہویا‪ -‬ہہم بخا تنئت‬
‫کہ تیار تخ مییں ت‬
‫خال ا‬
‫ے ہہییں ت‬
‫یدگی م ی ئیں ڈراما ت‬
‫تز ی ش‬
‫ن‬
‫ن‬
‫س‬
‫کے م ظان بق پرقی اور اری قاء پیذ تیپر تہہو ن ت‬
‫دارایہ سماج‪ ،‬سو لسٹ سماج‬
‫مادی‬
‫اج‪ ،‬قدییم ت ت‬
‫خالت ن‬
‫ن‬
‫ئے ہہییں‪ -‬انش یناتی تسم ن‬
‫سماج‪ ،‬بخاگییردارا تیہ سماج‪ ،‬سرماییہ ئ‬
‫ب‬
‫م‬
‫ظ‬
‫ی‬
‫ہے‪ -‬اور تییہ تمام انسان کی پرقی کے سابھ ہہی متیروک ہہو بخابییں شگے‪) -‬بیحی نہ نہاں اییک‬
‫جہ‬
‫کا‬
‫قی‬
‫پر‬
‫کی‬
‫الت‬
‫خ‬
‫مادی‬
‫خصوص‬
‫ہور‬
‫کا‬
‫سب‬
‫ان‬
‫ئ‬
‫ئے گا جب سوشسلزم متیروک ن ن ظام ہی بیہو کا ہہہوگا(‪ -‬نو پبھر ن‬
‫و تقت ا ی سا بب‬
‫ہے گا کہ ہ‬
‫ہ‬
‫ک‬
‫سی اییک سمعاشی ت و تش یناشی ن ظام ئ کی‬
‫ہم‬
‫خا‬
‫سے‬
‫ہم‬
‫یثوں‬
‫خدا‬
‫ا‬
‫آ‬
‫ھی‬
‫ب‬
‫ک‬
‫ن ن‬
‫ن ن ن‬
‫ن‬
‫پ ہ تن ن‬
‫ن ت‬
‫پچ‬
‫نن‬
‫م س‬
‫پپییروی کرییں ب ن‬
‫ئے‪ -‬ک ینا‬
‫دی بخا‬
‫مادی ن نخالت کے ب نا‬
‫ے وقت کے‬
‫ہے کہ ا پنئ‬
‫جب کہ بنئی نوع ا تنسان کی ضرورت نییہ‬
‫طر مییں ن ظام ت کو ل ل پرقی ت‬
‫ش‬
‫ت‬
‫ہ‬
‫ت‬
‫ت‬
‫ن‬
‫ص‬
‫ی ف‬
‫ئے ہہییں کہ تمام‬
‫یک اسلیمی معا‬
‫ہے؟ بجو ن نکہئ‬
‫شی ن ن‬
‫ہے ا ل نم نییں ییہ بتجو ی تپز کر ر ہ‬
‫ظام دییا ہ‬
‫ییہ نبیات قا ب ال ئہم ہ‬
‫ہے ت ہہو ت‬
‫یں کے اخدا ئے قرآن م ی بیں ا ی‬
‫ے ہہ ی ن‬
‫ت‬
‫ش‬
‫ے‪ -‬ضرف اییک جمود کا کار ت ہ‬
‫ےا ی ت ہ‬
‫ہ‬
‫ہ‬
‫ہے‪ -‬تمام می شحرکن نسماج‬
‫کے ت لئ‬
‫زما‬
‫یں ا تییک ن ظام ئ‬
‫رکھ س بکبنا ہ‬
‫مسلس ت ش‬
‫سماج ہ ت‬
‫یک ہی تن ظام اہویا پخا یہئ ن ن‬
‫نوںج ت‬
‫ہی تمام زمانوں م ی ئ‬
‫ی‬
‫ب‬
‫ن‬
‫ے قرآن مییں ئ کوتی ھی ش یناشی و معاشی ن ظام‬
‫ہے‪ -‬شاشی لئ‬
‫اموں مییں‬
‫ے پرقی کرئے بخائے ہہییں‬
‫ے ن یس‬
‫بجیس‬
‫لچب ب نند ی لی آظتی رہ ت‬
‫ئی ہ‬
‫س‬
‫ست ان کے ن ظ ن‬
‫ن‬
‫ب‬
‫م‬
‫ی‬
‫س‬
‫ہہمدردی‪ ،‬مساوات‪ ،‬حمبیت کے‬
‫ے‬
‫ضال کا شکار لوگوں کے لئ‬
‫ے خالت کو ئ ھئ‬
‫ندرج ہییں کیثویکہ مییرے عزیپز دو ت توں‪ ،‬ئآپ کو ا پن نئ‬
‫ے اور لم تو ا یخ ن‬
‫تن‬
‫ے اپب ننا دماغ اس‬
‫ےہ‬
‫ن‬
‫آپ اس‬
‫اضولوں ) ہہمدردی‪،‬‬
‫نادی‬
‫کے‬
‫لم‬
‫اگر‬
‫اور‬
‫ہے‪-‬‬
‫یا‬
‫کر‬
‫عمال‬
‫ئ‬
‫کے‬
‫ئے‬
‫ہوئے خل کر‬
‫اضولوں کو ذ ہ تہن مییں ر شکھئ‬
‫ببپ ینادی‬
‫پ‬
‫بب‬
‫ن‬
‫ت‬
‫ن‬
‫ن‬
‫ت‬
‫ہ‬
‫ل‬
‫ن‬
‫ی‬
‫ت‬
‫ی‬
‫ت‬
‫م تساوات اور ظلم و اسی شخضال کا نکار م ظلوموں سے حمبیت( کو ذ ہ‬
‫ے پپر پ ہیچ سک تئ‬
‫ہن مییں شرکھییں نو پنوری سیبج یندگی کے سا تبھ اییک ہہی یبی بیج ئ‬
‫ے ہہییں ن کہ ن‬
‫ت‬
‫ش ن‬
‫ہے‪ -‬کیثونیکہ سوس بم‬
‫ہے‪ -‬ییہ ذرا تع پب ینداوار کو تمام انسانوں‬
‫ہے کہ سو تسلزم ہہی ان اسانییت کی ناگلی منیزل‬
‫حقییقت ییہ‬
‫ثوروں مجکوموں کو آزاد کرتی ہ‬
‫ہ‬
‫ہ‬
‫ت‬
‫لزم ح ب ی ت‬
‫ن‬
‫ی‬
‫ن‬
‫ہے‪-‬‬
‫ہے اور ان کو ا پنئ‬
‫ے سماج اور اپنئی یار تخ کا مالک بب نا دنئی ہ‬
‫کی ملکییت مییں لے آتی ہ‬
‫ت‬
‫ئ‬
‫ن‬
‫ش نن ن‬
‫ت‬
‫ن‬
‫ت‬
‫ے ہہییں‪ -‬نخاص طور پپر بجب ببھی‬
‫شی ن ظام یتہییں بتجویپز تکریا مگر ہہم پبھر ببھی چضرت م ن )ص( کی بخدو بجہد سے کاقی کپچھ ش ینکھ سکئ‬
‫عا‬
‫تی‬
‫اگر پچہ اس شلم ن نکو‬
‫ئ‬
‫م‬
‫ئ‬
‫ش‬
‫ک‬
‫ہ‬
‫ہ‬
‫ے گا‪-‬‬
‫کوتی معاشی ن ظام کا بخاپزہ لے نو وہ ہم یشہ قرآن و خدیبث مییں ربیاہ کی مماتعت کو ذہن مییں ر ھ‬