‫‪British Broadcasting Corporation‬‬

‫آخری وقت اضبعت‬

‫‪:‬جمعرات ‪ 9‬جون ‪2011, 18:21 GMT 23:21 PST‬‬

‫لوڈ ضیڈوگ سے تىگ ہوکر پبرک گیب تھب‘‬
‫ریبض سہیل‬

‫ثی ثی سی اردو ڈاٹ کبم‪ ،‬کراچی‬
‫اویس سبلہ سرفراز وے پچھلے مبہ میٹرک کب امتحبن دیب تھب اور وہ ضپىگ کمپىی میں‬
‫مالزمت کب خواہص مىد تھب‬
‫کراچی میں ریىجرز کی فبئروگ میں ہالک ہووے والے ووجوان سرفراز ضبہ کے اہل خبوہ‬
‫اور پڑوسیوں کب کہىب ہے کہ ثجلی جبوے کے ثعد ثیىظیر ثھٹو پبرک میں جبوب اس کب‬
‫معمول تھب۔‬
‫سرفراز ضبھ صدر ٹبؤن کی کچی ثستی ہجرت کبلووی کب رہبئطی تھب‪ ،‬غریت طجقے کی‬
‫یہ ثستی ضہید ثیىظیر ثھٹو پبرک سے کوئی ایک کلومیٹر دور ہے۔‬
‫اویس سبلہ سرفراز ضبہ کے ثھبئی سبلک ضبہ وے ثی ثی سی کو ثتبیب کہ وہ دفتر میں‬
‫تھے کہ ان کی والدہ کب ٹیلیفون آیب کہ پڑوس کی خواتیه وے پبرک سے واپسی پر‬
‫ثتبیب ہے کہ سرفراز کب کسی کے سبتھ جھگڑا ہوا ہے اور وہ سرفراز کب ٹیلیفون مال‬
‫رہی ہیں مگر ومجر ثىد جبرہب ہے۔‬
‫سبلک ضبہ جو سمب ٹی وی چیىل سے واثستہ ہیں ان کب کہىب ہے کہ اوہوں وے سوچب‬
‫کہ یہ عبم پریکٹس ہے کہ پولیس لوگوں کو ڈراوے دھمکبوے کے لیے تھبوے لے‬
‫جبتی ہے اور موثبئیل فون ثىد کرادیتی ہے۔‬

‫پوری دویب وے دیکھب کہ کس طرح میرے ثھبئی کو مبرا گیب ہے‪:‬سبلک ضبہ‬
‫ان کب کہىب تھب کہ’میں ثوٹ ثیسه تھبوے پہىچ گیب اور وہبں ڈیوٹی افسر سے پوچھب کہ‬

‫آپ لوگ میرے ثھبئی کو تو اٹھبکر وہیں الئے اوہوں وے اوکبر کیب‪ ،‬اس کے ثعد میں‬ ‫کلفٹه تھبوے گیب مگر وہبں ثھی وہ مجھے وہیں مال۔ میں دوثبرہ ثوٹ ثیسه تھبوے پر‬ ‫آیب تو ڈیوٹی افسر وے پوچھب کہ ہوا کیب ہے؟ میں وے اسے ثتبیب کہ سىب ہے کہ‬ ‫میرے ثھبئی کب ثیىظیر ثھٹو پبرک میں کسی سے جھگڑا ہوا ہے اس وے کہب ہبں‬ ‫ریىجرز کے سبتھ جھگڑے میں کوئی لڑکب زخمی ہوا ہے‘۔‬ ‫سبلک ضبھ کے مطبثق اسی دوران اوہوں وے جىبح ہپستبل اور دیگر دوستوں کو‬ ‫ٹیلیفون کیے اس دوران اوہیں پتہ چال کہ ایک ووجوان جو فبئروگ میں زخمی ہوا تھب‬ ‫فوت ہوگیب ہے‪ ،‬جس پر اوہیں ووے فیصد تک یقیه ہوگیب تھب کہ اة ان کب ثھبئی وہیں‬ ‫رہب ثس جىبح ہپستبل پہىچے تو ثھبئی کی الش ملی۔‬ ‫اوہوں وے ثتبیب کہ’ الش پر دو ریىجرز اہلکبر پہرا دے رہے تھے ان سے پوچھب کہ‬ ‫یہ کیسے ہوا تو اوہوں وے مطورہ دیب کہ ان کے ثجبئے ریىجرز ہیڈکوارٹر سے راثطہ‬ ‫کروں‪ ،‬اوہوں وے صرف یہ ثتبیب کہ میرا ثھبئی مقبثلے میں مبرا گیب ہے‘۔‬ ‫سرفراز ضبہ کے دادا پبکستبن کے زیر اوتظبم کطمیر کے عالقے ثبغ سے تعلق رکھتے‬ ‫ہیں اور وہ ثرطبووی فوج میں ثھی رہے مگر ثعد میں اوہوں وے کراچی میں مستقل‬ ‫رہبئص اختیبر کرلی۔‬ ‫میں وے اپىے طور پر لوگوں سے جو معلومبت لی ہیں اس کے مطبثق وہبں کوئی‬ ‫لڑکب اپىی گرل فریىڈ کے سبتھ آیب ہوا تھب‪ ،‬جس سے سرفراز کب جھگڑا ہوا اس میں‬ ‫سی آئی ڈی پولیس کب ایک اہلکبر ثھی ضبمل ہوگیب کیووکہ وہ لڑ کب اس کے ذریعے‬ ‫ہی پبرک میں آیب تھب‬ ‫سرفراز کے ثڑے ثھبئی سبلک ضبہ کب کہىب ہے کہ پولیس وے اوہیں ثتبیب کہ سرفراز‬ ‫کے خالف پووے چھ ثجے ایف آئی آر دائر کی گئی ہے ججکہ وہ سبڑھے پبوچ ثجے‬ ‫تھبوے پر پہىچے تھے تو پولیس وے واقعے سے العلمی کب اظہبر کیب تھب۔‬ ‫لواحقیه وے ریىجرز کے خالف ایف آئی آرر درج کراوے کی کوضص کی مگر کبمیبثی‬ ‫حبصل وہیں ہوسکی‪ ،‬سبلک ضبھ کے مطبثق اسی دوران خدا وے ان پر مہرثبوی کی اور‬ ‫ان کی اپىی صحبفی ثرداری کے کیمرہ میه وے اس پورے واقعے کی عکس ثىدی‬ ‫کرکے سرفراز کو ثے گىبہ ثبثت کردیب۔‬ ‫اویس سبلہ سرفراز وے پچھلے مبہ میٹرک کب امتحبن دیب تھب اور وہ ضپىگ کمپىی میں‬ .

‫مالزمت کب خواہص مىد تھب۔‬ ‫سبلک ضبھ کب دعویٰ‬ ‫اس کے مطبثق وہبں‬ ‫سرفراز کب جھگڑا ہوا‬ ‫کیووکہ وہ لڑ کب اس‬ ‫ہے کہ اوہوں وے اپىے طور پر لوگوں سے جو معلومبت لی ہیں‬ ‫کوئی لڑکب اپىی گرل فریىڈ کے سبتھ آیب ہوا تھب‪ ،‬جس سے‬ ‫اس میں سی آئی ڈی پولیس کب ایک اہلکبر ثھی ضبمل ہوگیب‬ ‫کے ذریعے ہی پبرک میں آیب تھب۔‬ ‫’اوہوں وے سرفراز کو پہلے مبرا پیٹب اور اس کے ثعد ریىجرز کے حوالے کردیب۔پوری‬ ‫دویب وے دیکھب کہ کس طرح میرے ثھبئی کو مبرا گیب ہے‪ ،‬گولیبں مبروے کے ثعد‬ ‫آدھے سے پووے گھىٹے تک ریىجرز اہلکبروں وے اسے وہبں رکھب اور ہپستبل وہیں‬ ‫پہىچبیب‘۔‬ ‫سبلک ضبہ کے مطبثق سرفراز وہبں کسی کب کچھ ثگبڑوے وہیں ثلکہ ثجلی کی لوڈ‬ ‫ضیڈوگ سے تىگ ہوکرگیب تھب۔‬ .

Sign up to vote on this title
UsefulNot useful